اڑیسہ میں رکن پارلیمان کا قتل

Image caption انتالیس سالہ ماجھي ایک اہم قبائلی رہنماء تھے۔

بھارت کی ریاست اڑیسہ میں ستاروڈھ پارٹی بیجو جنتا دل کے ایک رکن پارلیمان اور ان کے ذاتی محافظ کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا ہے۔

بي جےڈي کے رکن پارلیمان جگبندھو ماجھي کے قتل میں مبینہ طور پر ماؤ نواز باغیوں کی طرف سے ایک عوامی عدالت کے دوران گولی ماری گئی ہے۔

انتالیس سالہ ماجھي ایک اہم قبائلی رہنماء تھے جو عمرکوٹ کے حلقہ سے منتخب ہو کر آئے تھے۔

پولیس ڈائریکٹر جنرل منموہن پرِہراج کے مطابق ماجھي زمین کی لیز کے کاغذات تقسیم کرنے گونا گاؤں گئے تھے اور اس دوران انہیں گولي مار دی گئی۔ اس حملے میں ان کے محافظ پی کے پاکترو بھی ہلاک ہوگئے۔

پولیس ڈائریکٹر جنرل کے مطابق یہ نکسل شدت پسندی سے متاثرہ علاقہ ہے اور لیز کے کاغذات کی تقسیم کے دوران چار نامعلوم مسلح افراد مجمع کے درمیان گھس آئے اور جگبندھو ماجھي پر حملہ کر دیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس معاملے میں ماؤنواز شامل ہیں اور معاملے کے تمام پہلوؤں پر تفتیش کی جا رہی ہے۔

ماجھي اور ان کے محافظ پی کے پاکترو کی لاشوں کو پہلے رائےگڑھ پولیس تھانے میں لے جایا گیا۔

پولیس کے مطابق اس واقعہ کی تفتیش جاری ہے اور اس سلسلے میں کچھ شواہد بھی جمع کیے گئے ہیں۔

اسی بارے میں