بھارت: مظاہرین کا جوہری پلانٹ کا گھیراؤ

فائل فوٹو تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بھارت میں پہلے بھی ایٹمی بجلی گھروں کے حوالے پائے جانے والے خدشات کی وجہ سے مظاہرے ہوئے ہیں۔

جنوبی بھارت میں مظاہرین نے احتجاج کرتے ہوئے جوہری بجلی گھر کی طرف جانے والے راستے بلاک کر دیے ہیں۔

مظاہرین نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ نیوکلیئر پاور پلانٹ غیر محفوظ ہے۔

جوہری بجلی گھروں پر کام روکنے کی درخواست

حوہری پلانٹ میں کام کرنےوالے پانچ ہزار کارکنوں میں سے صرف ایک سو کارکن رکاوٹیں عبور کرکے تعمیراتی کام کے موقع پر پہنچ سکے ہیں۔

جنوبی بھارت کے علاقے کدن کلم میں زیر تعمیر جوہری بجلی گھر کے قریب آباد دیہاتیوں نے کہا ہے کہ اس سال کے شروع میں جاپان میں آیے زلزلے سے فوکوشیما جوہری پلانٹ میں حادثے کے بعد ان کے خدشات بڑھ گئے ہیں۔

انھوں نے مطالبہ کیا ہے کہ ایک ہزار میگا واٹ کے دو ری ایکٹرز کی تعمیر فوری طور پر روک دی جائے۔

اس جوہری بجلی گھر نے اس سال دسمبر میں کام شروع کرنا تھا لیکن اب حکام کا کہنا ہے کہ اگر اسی طرح مظاہرے جاری رہے تو اس میں تاخیر ہو سکتی ہے۔

بھارت میں کئی سرکردہ سابق سرکاری افسران نے سپریم کورٹ سے درخواست کی ہے کہ وہ ملک میں زیر تعمیر تمام جوہری بجلی گھروں پر اس وقت تک کام روکنے کے لیے حکم جاری کرے جب تک ان سے لاحق خطرات کا عدالت کی نگرانی میں جائزہ نہیں لیا جاتا۔

اسی بارے میں