سیف علی خان پٹودی خاندان کے دسویں نواب

سیف علی خان تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سیف علی خان پٹودی خاندان کے اب دسویں نواب ہیں

بالی وڈ کے اداکار سیف علی خان کو پٹودی سلسلے کا دسواں نواب منتخب کیا گیا ہے۔ ان کے والد منصور علی خان پٹودی کا حال ہی میں انتق‍ال ہوگيا تھا۔

پیر کے روز نواب کے طور پر ان کی تاج پوشی پٹودی ہاؤس میں کی گئی ہے جہاں ایک شاندار تقریب کا انعقاد کیا گيا تھا۔

اس موقع پر سیف علی خان کو ایک پگڑی پہنائي گئی جسے خاص طور پر تیار کیا گيا تھا۔ وہ بادامی رنگ کی شیروانی میں ملبوس تھے۔

سیف علی خان کا کہنا ہے کہ ان کے والد نواب پٹودی کی وفات کے بعد سے ہی علاقے کے بہت سے لوگ نئے نواب کے انتخاب پر مصر تھے اسی لیے وہ سب کےاحساسات کا خیال کرتے ہوئے ایسا کر رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اس کا مقصد ان بہت سے اچھے کاموں کو جاری رکھنا ہے جو ان کے والد نواب منصور علی خان پٹودی کرتے آئے تھے۔

اس تاج پوشی کی تقریب کے لیے علاقے کے باون دیہاتوں کے سربراہ جمع ہوئے تھے جنہوں نے باقاعدہ طور پر سیف علی خان کو پٹودی خاندان کا دسواں نواب تسلیم کیا۔

ان کی بہن صبا خان نے بتایا کہ پٹودی علاقے کے ’باون دیہاتوں کے مکھیہ والد کی وفات سے ہی اس بات پر اصرار کرتے رہے تھے کہ بیٹے کا خاندان کا نیا نواب مقرر کیا جائے‘۔

چند روز پہلے انہوں نے بھوپال میں کہا تھا کہ ان کے والد کا چالیسواں مکمل ہونے کے بعد تاجپوشی کی تقریب ہوگي۔

پٹودی دلی سے تقریباً پینتیس کلو میٹر کے فاصلے پر ریاست ہریانہ میں واقع ہے جہاں خاندان کی بڑی جائیداد اور املاک بھی ہیں۔

بھارتی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان منصور علی خان پٹودی شدید علالت کے بعد بائیس ستمبر کو انتقال کر گئے تھے۔

ڈاکٹروں کے مطابق پٹودی کے پھیپڑوں میں شدید انفکشن تھا جس کی وجہ سے ان کے جسم کو آکسیجن نہیں مل رہی تھی اور اسی وجہ سے ان کی موت واقع ہوئی۔

پٹودی صرف ایک آنکھ میں بینائی ہونے کے باوجود اکیس سال کی عمر میں بھارتی کرکٹ ٹیم کے کپتان بن گئے تھے۔ پٹودی کے والد بھی بھارتی ٹیم کے کپتان تھے اور انہوں نے انگلینڈ کے لیے بھی ٹیسٹ کرکٹ کھیلی تھی۔

اسی بارے میں