’الطاف کے خلاف ثبوت پیش کروں گا‘

ذوالفقار مرزا تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ڈاکٹر مرزا الطاف حسین کے خلاف مہم چلا رکھی ہے

پاکستان پیپلز پارٹی کے باغی رہنماء ڈاکٹر ذوالفقار مرزا کی لندن روانگی کے بعد متحدہ قومی موومنٹ کے سربراہ الطاف حسین نے بدھ کی صبح ٹیلیفون پر صدر آصف علی زرداری سے رابطہ کیا ہے۔

صدارتی ترجمان فرحت اللہ بابر کے مطابق دونوں رہنماؤں نے ملکی صورتحال اور اتحادی جماعتوں میں تعاون کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا ہے۔

لیکن کچھ حلقوں کا کہنا ہے کہ سندھ میں بلدیاتی نظام، ایم کیو ایم حقیقی کے رہنماء آفاق احمد کی ممکنہ رہائی اور ڈاکٹر ذوالفقار مرزا کی لندن روانگی کے معاملات بھی زیر غور آئے۔

ڈاکٹر ذوالفقار مرزا نے منگل کو لندن روانگی سے قبل کہا تھا کہ وہ لندن کی عدالت میں متحدہ قومی موومنٹ کے سربراہ الطاف حسین کے خلاف دستاویزی ثبوت پیش کریں گے۔

میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ وہ ایک پاکستانی کی حیثیت سے جا رہے ہیں اور عوام ان کی کامیابی کے لیے دعا کرے۔ بقول ان کے وہ اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک الطاف حسین کو سزا نہیں ہوجاتی۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption دونوں رہنماؤں نے مرزا کے دورہ کے حوالے سے بھی بات چيت کی ہے

کراچی سے نامہ نگار ریاض سہیل نے بتایا کہ اس سے پہلے قومی اسمبلی کی سپیکر اور ڈاکٹر ذوالفقار مرزا کی بیگم فہمیدہ مرزا نے منگل کی دوپہر کو ان سے ملاقات کی تھی جس کے بعد وہ اسلام آباد روانہ ہوگئیں جہاں انہوں نے صدر آصف علی زرداری سے ملاقات کی اور انہیں ڈاکٹر مرزا کے موقف سے آگاہ کیا۔

ڈاکٹر ذوالفقار مرزا ساڑھے تین سال تک سندھ کے صوبائی وزیر داخلہ رہے ہیں، انہوں نے انتیس اگست کو پریس کانفرنس میں متحدہ قومی موومنٹ اور وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک پر سنگین نوعیت کے الزامات عائد کیے تھے۔ اس پریس کانفرنس کے بعد وہ سینئر صوبائی وزیر، پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر نائب صدر کے عہدوں اور اسمبلی کی رکنیت سے مستعفی ہوگئے تھے۔

پہلے ان کی تنقید کا نشانہ ایم کیو ایم، اس کی قیادت اور وفاقی وزیر رحمان ملک تھے بعد میں انہوں نے صوبائی وزراء پیر مظہر الحق، منظور وسان، آغا سراج درانی اور دیگر کو بھی تنقید کی لپیٹ میں لے لیا۔

بدین میں دو روز قبل ان کی مخالفت میں ریلی نکالی گئی، جس کے شرکاء کی ان کے حامیوں سے جھڑپیں بھی ہوئیں۔ پس پردہ ریلی کے شرکا کو صوبائی وزیر داخلہ منظور وسان کی حمایت حاصل تھی۔ بعد میں مقامی قیادت اور وزراء کی شکایت پر پیپلز پارٹی ضلع بدین کے ان عہداروں کو تبدیل کردیا گیا جن کی ڈاکٹر مرزا کو حمایت حاصل تھی۔

اسی بارے میں