راجستھان میں ڈاکٹروں کی ہڑتال ختم

ڈاکٹر
Image caption ڈاکٹروں کے مطالبات اور ان کے دیگر مسائل کو حل کرنے کے لئے پانچ وزراء کی کمیٹی بنائی گئی ہے۔

بھارتی ریاست راجستھان میں ڈاکٹروں نے گیارہ دن سے جاری ہڑتال ختم کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔

ریاستی حکومت کی جانب سے ہڑتال کرنے والے ڈاکٹروں پر سے ریسما ایکٹ ہٹانے اور گرفتار ڈاکٹروں کی رہائی کے بعد ڈاکٹروں نے کام پر لوٹنے کا رسمی اعلان کیا۔

اس سے قبل راجستھان کی حکومت نے سنیچر کی دیر رات ہڑتال کرنے والے ڈاکٹروں کو نئے سال کا تحفہ دیتے ہوئے ریاست میں اہم خدمات دیکھ بھال ایکٹ ریسما ہٹانے کا اعلان کیا تھا۔

ہڑتال کے دوران گرفتار کئے گئے ڈاکٹروں کو رہا کرنے کے بھی احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں۔

وزیر اعلی اشوک گہلوت نے ڈاکٹروں کے مطالبات اور ان کے دیگر مسائل کو حل کرنے کے لئے پانچ وزراء کی کمیٹی بنائی ہے۔

یہ کمیٹی ہڑتال کے دوران برطرف کیے گئے ڈاکٹروں کے معاملات کو بھی دیکھے گی۔ وزیر اعلی کے اس فیصلے کو نئے سال کے تحفے کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔

پانچ وزراء کی کمیٹی میں ڈاکٹر جتیندرس، درر میاں، راجندر پاريك، ڈاکٹر راج کمار شرما اور ویریندر بینيوال شامل ہیں۔

وزیر اعلی نے شام کو وزیر صحت اور سینئر افسران کے ساتھ تفصیلی بات چیت کی ۔

حکومت نے کہا تھا کہ سنیچر کی شام تک ساڑھے چھ سو سے زائد ڈاکٹر کام پر واپس لوٹ آئے ہیں اور انہیں ملا کر اب تک کام پر لوٹنے والے ڈاکٹروں کی تعداد پینتالیس سو سے زیادہ ہو گئی ہے۔

راجھستان میں ڈاکٹروں کی تنظیم کے صدر ڈاکٹر جيڈي مہیشوري نے حکومت کے ریسما ہٹانے اور گرفتار ڈاکٹروں کو رہا کرنے کا خیر مقدم کیا ہے۔

اس سے قبل ، انڈین میڈیکل ایسوسی ایشن نے دھمکی دی تھی کہ اگر ریاست راجستھان کی حکومت اور ڈاکٹروں کے درمیان جاری تعطل جلد ختم نہیں ہوا تو اس کا اثر دوسری ریاستوں میں بھی پڑ جا سکتا ہے۔

راجستھان میں ڈاکٹر تنخواہ بڑھائے جائے اور وقت سے ترقی کے دیئے جانے کے مطالبے کے تحت اکیس دسمبر سے ہڑتال پر تھے۔

اسی بارے میں