بس نے راہگیروں کو کچل دیا، نو ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بھارتی ریاست مہاراشٹر کے شہر پونے میں سرکاری بس کے ڈرائیور نے نو افراد کو کچل دیا ہے۔

اس واقعے میں ستائس افراد زخمی ہوئے ہیں جس میں کئی کی حالت نازک ہے۔ ہلاک ہونے والوں میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔

بدھ کی صبح مہاراشٹر سٹیٹ کارپوریشن کے ڈرائیور سنتوش مانے نے پونے سولا پور کے مصروف روڈ پر غلط سائیڈ سے آکر افراتفری مچا دی۔ یہ واقعہ شہر کے مرکزی علاقے سوارگیٹ میں پیش آیا ہے۔

تیس سالہ ڈرائیور سنتوش مانے کو پولیس نے ایک گھنٹے تک پیچھا کرنے کے بعد گرفتار کر لیا۔ اطلاعات کے مطابق کئی کاروں اورگاڑیوں کا بھی نقصان ہوا ہے۔

بھارتی خبر رساں ادرے پی ٹی آئی کے مطابق ڈرائیور سرکاری بس چلا رہا تھا اور اس نے راستے میں جو بھی گاڑی یا شخص ملا اسے ٹکر مارنے کی کوشش کی اور لوگ اپنی جان بچانے کے لیے بھاگتے رہے۔

ملنے والی اطلاعات کے مطابق ڈرائیور شاید ذہنی طور پر پریشان تھا لیکن پولیس نے کہا ہے کہ اسے حراست میں لے لیا گیا ہے اور بغیر تفتیش کے کچھ بھی کہنا درست نہیں ہوگا۔

پونے کے پولیس کمشنر میران بوروانکر کا کہنا ہے کہ مانے لائسنس یافتہ سرکاری ڈرائیور ہیں جنہوں نے صبی ستارہ جانے والی بس کی ذمہ داری سنبھالی ہوئی تھی۔

’بس پر سوار ہونے کے بعد اس نے افرا تفری مچادی۔ راستے میں جو بھی گاڑی ملی یا پیدل چلنے والا کوئی شخص نظر آیا تو اسے اس نے ٹکر مارنے کی کوشش کی۔ وہ بہت ہی خطرناک موڈ میں تھا۔‘

پونے میں امن و قانون کے نفاذ کے ذمہ دار افسر ست پال سنگھ نے کہا ’اس واقعے میں نو افراد ہلاک ہوچکے ہیں اور ستائس زخمی ہوئے ہیں۔‘

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ بس کو اس طرح آتے دیکھ کر لوگ جان بچانے کے لیے بھاگتے پھر رہے تھے۔

اسی بارے میں