دلی: زخمی بچی کی حالت تشویش ناک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

بھارتی دارالحکومت دلی کے ایک ہسپتال میں ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ایک زیرِ علاج ننھی بچی کی حالت انفیکشن کی وجہ سے تشویش ناک ہوگئی ہے۔

پریس ٹرسٹ آف انڈیا سے بات کرتے ہوئے ماہرِ علم العصاب دیپک اگروال نے کہا کہ اس بچی کے بچنے کا امکان بہت کم ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ اٹھارہ جنوری کو اس بچی کو ایک کم عمر خاتون ہسپتال لائی تھی جس کا کہنا تھا وہ اس کی ماں ہے۔ ڈاکٹروں کے مطابق ہسپتال لائے جانے کے وقت اس بچی کے جسم پر زخم سمیت انسانی دانتوں کے نشانات تھے اور اس کے ہاتھوں کی ہڈیاں ٹوٹی ہوئی تھیں۔

ہسپتال میں ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ انھوں نے اس سے پہلے کبھی اتنا ظلم اتنے چھوٹے بچے پر نہیں دیکھا۔

ڈاکٹر اگروال نے بتایا ’اس بچی کو سیپٹیکیمیا نامی خون کی انفیکشن ہو گئی ہے جو جگر اور گردوں تک پہنچ سکتی ہے۔‘

انھوں نے کہا ’اس کی حالت تشویش ناک ہے اور اس کے بچنے کا امکان پچاس فیصد سے کم ہے۔‘

پولیس نے اس کیس کے سلسلے میں بچی کے والد سمیت دو آدمیوں اور ایک خاتون کو گرفتار کر لیا ہے۔

اس بچی پر اب تک دو آپریشن کیے جا چکے ہیں۔