یو پی انتخابات میں چھٹے مرحلے کی پولنگ

Image caption پولنگ صبح سات سے پانچ بجے تک جاری رہیگی

بھارت کی ریاست اترپردیش میں اسبملی انتخابات کے چھٹے مرحلے میں کُل تیرہ اضلاع کی اڑسٹھ سیٹوں پر منگل کو پولنگ ہورہی ہے۔

اس مرحلے میں جن علاقوں میں انتخابات ہورہے ہیں وہ دارالحکومت دلی کے قریبی علاقے ہیں اور بعض دلی کے مضافات میں سے ہیں۔

منگل کے روز موسم اچھا ہے اور صبح ہی سے پولنگ مراکز پر رائے دہندگان کی لمبی قطاریں دیکھی گئی ہیں۔

انتخابات کے لیے سخت حفاظتی بند و بست کیےگئے ہیں اور صاف و منصفانہ الیکشن کے لیے انتخابی کمیشن کے بہت سے مبصر گاڑیوں سے علاقوں کا دورہ کر رہے ہیں۔

اس مرحلے میں مغربی یوپی میں انتخابات ہورہے ہیں جو انتخابی اخلاق و ضوابط پر عمل در آمد کے لیے سب مشکل علاقہ مانا جاتا ہے اور اس کئي نوعیت سے بہت حساس بھی ہے۔

دلی سے متصل نوئیڈا، گریٹر نوئیڈا، غازی آباد، میرٹھ ہاپوڑ، بلند شہر، کھورجہ، علی گڑھ، آگرہ، متھرا، اور سہارنپور جیسے اضلاع اپنی صنعتوں اور تجارت کے لیے بھی مشہور ہیں۔

بلند شہر خود وزیر اعلی مایا وتی کا آبائی علاقہ ہے اور اس بار علاقے میں کسانوں کی زرعی زمین لیے جانے جیسے مسائل کا بول بالا ہے۔

آگرہ، میرٹھ، علی گڑھ اور سہارانپور جیسے اضلاع فرقہ وارنہ نوعیت سے بھی حسّاس رہے ہیں اور دیوبند جیسا مدرسہ بھی اسی علاقے میں واقع ہے۔

ریاست اترپردیش کی اسمبلی کے سولہویں انتخابات سات مرحلوں میں ہورہے ہیں اور آخری مرحلہ چار مارچ کو ہوگا۔ ووٹوں کی گنتی چھ مارچ کو کی جائےگی۔

ان انتخابات پر سبھی جماعتوں کی نگاہیں لگی ہوئی ہیں کیونکہ یوپی الیکشن کے نتائج مرکزی حکومت پر بھی اثر انداز ہوں گے۔

اسی بارے میں