بھارت: کپاس کی برآمد پر پابندی ختم

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

بھارت میں کپاس کی برآمد پر لگائی گئی پابندی ختم کر دی گئی ہے۔ یہ پابندی صرف ایک ہفتہ پہلے ہی نافذ کی گئی تھی۔

حکومت کی جانب سے گزشتہ پیر کو پابندی کے اعلان پر کاشتکاروں نے شدید ردِ عمل کا اظہار کیا۔

حکومت نے پابندی پر وضاحت کرتے ہوئے کہا تھا کہ کپاس کی رسد کو اندرونی صنعت کے لیے محفوظ کرنے کے لیے یہ اقدام کیا گیا ہے۔

تاہم کاشتکاروں نے اس پر غم و غصے کا اظہار کیا اور وزیرِ زراعت نے کہا کہ اس پالیسی کے بارے میں ان سے رائے نہیں مانگی گئی تھی۔

کپاس کے تاجروں کی نمائندہ تنظیم کاٹن ایسوسی ایشن آف انڈیا کے نائب صدر نایان مرانی کا کہنا تھا کہ ہمیں اس بات کا احساس ہونا چاہیے کہ ہم ضرورت سے زیادہ کپاس پیدا کرنے والا ملک ہیں اور ہماری اضافی کپاس کو برآمد کرنا ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ ایک محدود طرز کی سوچ ہے جو کہ کپڑے کی صنعت کی جانب سے آتی ہے۔

کپاس کی پیداوار میں بھارت دنیا میں دوسرے نمبر پر آتا ہے۔ جب پابندی عائد کی گئی تو بھارتی تاجروں کے پاس کپاس کی پچیس لاکھ گانٹھیں برآمد کرنے کے آرڈر تھے۔

جب پابندی عائد کی گئی تو برآمدات حکومتی اہداف سے کہیں زیادہ تھی۔

اسی بارے میں