بھارت۔پاک تجارت کے لیے ایک نیا ’دروازہ‘ کھل گیا

بھارت- پاک سرحد پر انٹگریٹڈ چک پوسٹ تصویر کے کاپی رائٹ Other
Image caption بھارت- پاک سرحد پر انٹگریٹڈ چک پوسٹ جمعہ کو افتتاح کیا گیا۔

بھارت کے وزیر داخلہ پی چدمبرم نے بھارت اور پاکستان کے درمیان تجارت کو فروغ دینے کے مقصد سے دونوں ممالک کے درمیان قائم اٹاری۔واہگہ سرحد پر ’انٹگریٹڈ‘ چیک پوسٹ (آئی سی پی) کا جمعہ کو افتتاح کیا۔

اس موقع سے بھارت اور پاکستان کے تجارت کے وزرا آنند شرما اور مخدوم فہیم کے علاوہ دونوں ممالک کے صوبہ پنجاب کے وزیر اعلی شہباز شریف اور پرکاش سنگھ بادل اور دیگر اہم شخصیات موجود تھیں۔

آئی سی پی کا افتتاح کرتے ہوئے چدمبرم نے کہا کہ پاکستان کے لیے ویزے میں نرمی کے بارے میں بھارت ‏غور و حوض کر رہا ہے تاکہ دونوں ممالک کے درمیان تجارت کو مزید فروغ دیا جا سکے۔

انھوں نے کہا کہ اس قسم کے تیرہ مزید چیک پوسٹ قائم کیے جائیں گے اور یہ اس سلسلے کی پہلی کڑی ہے۔

ذرائع کے مطابق اس موقع پر پنجاب کے وزیر اعلی پرکاش سنگھ بادل نے کہا: ’مجھے اس بات کے لیے انتہائی مسرت ہے کہ آئی سی پی کو بیساکھی جیسے مبارک دن کے موقعے سے باضابطہ شروع کر دیا گیا ہے۔‘

اس کے ساتھ ہی انھوں نے دو نوں ممالک کی حکومت سے فیروز پور میں حسینی والا کے مقام پر اسی قسم کے چیک پوسٹ کے قیام پر زور دیا۔

خبروں کے مطابق بھارت کی بین الاقوامی سرحد پر یہ اپنی نوعیت کی ایک ہی چیک پوسٹ ہے۔

اس یونائیٹڈ چیک پوسٹ پر مسافروں اور ان کے سامان کے لیے مخصوص اور علیحدہ ٹرمینل بنائے گئے ہیں جس سے کا‏غذی کارروائی میں تیزی آئےگی اور لوگوں کی آمدو رفت میں کم وقت لگے گا۔

فی الحال بھارت اور پاکستان کے درمیان مسافروں اور سامانوں کی نقل و حمل کے لیے ایک ہی راستہ ہے جس کے نتیجے میں وہاں اکثر جام لگ جاتا ہے اور پریشانی کا سبب بنتا ہے۔

تاجروں کے مطابق پاک۔بھارت سرحد سے گذرنے والے ٹرک اس جام میں کئی کئی دنوں تک پھنسے رہتے ہیں اور اس کی وجہ سے بہت سا سامان خراب بھی ہو جاتا ہے۔

اٹاری۔واہگہ سرحد پر قائم یہ چیک پوسٹ یعنی آئی سی پی ایک سو تیس ایکڑ پر پھیلا ہوا ہے اور اس کی تعمیر پر ایک سو پچاس کروڑ روپے خرچ ہوئے ہیں۔

پاکستان کی جانب سرحد پر بھی اس قسم کا ’انٹگریٹڈ‘ چیک پوسٹ موجود ہے۔ اسی دوران وزیر تجارت آنند شرما نےکہا ہے کہ پاکستان کو بھارت میں سرمایہ کاری کی اجازت دی جائے گی۔

بھارت اور پاکستان کے درمیان موجودہ تجارت دو اعشاریہ سات ارب ڈالر ہے اور یہ امید ظاہر کی جا رہی ہے کہ اس نئے چیک پوسٹ کے جاری ہونے سے دونوں ممالک کے دمیان تجارت میں پانچ فی صد کا اضافہ ہوگا۔

دونوں ملکوں میں خوشحالی

واہگہ سرحد پر نئے تجارتی دروازے کے افتتاح کے بعد بھارت سے واپسی پر وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان زمینی راستے سے تجارت ہونے سے دونوں ملکوں میں خوشحالی آئے گی اور غربت کا خاتمہ ہوگا۔

لاہور میں بی بی سی کے نامہ نگار عبادالحق کے مطابق وزیرِ اعلیٰ نے کہا کہ یہ بات طے ہے کہ ماضی میں ہونے والی جنگوں سے دونوں ممالک کو بے پناہ نقصان پہنچا ہے، غربت اور بے روزگاری میں اضافہ ہوا ہے جبکہ وسائل تباہ ہوئے ہیں۔

میڈیاسے بات کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ دونوں ممالک کو میز پر بیٹھ کر اچھے پڑوسیوں کی طرح اپنے مسائل کو حل کرنا ہوگا کیونکہ بقول ان کے جنگوں کا کوئی نتیجہ نہیں نکلا۔

انہوں نے کہا کہ دو ملکوں کو اقتصادیات اور ٹیکنالوجی کے میدان میں ایک دوسرے کا مقابلہ کرنا چاہئے تاکہ دونوں ممالک میں ترقی اور خوشحالی آئے۔

اسی بارے میں