سٹیل پر امریکی محصول کو بھارت کا چیلنج

بھارتی اسٹیل تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption بھارت دنیا کے سب سے زیادہ اسٹیل پیدا کرنے والے ممالک میں سے ایک ہے

بھارت نے امریکہ کو عالمی تجارتی تنظیم (ڈبلیو ٹی او) میں سٹیل پر درآمدی محصول میں اضافے کے لیے چیلنج کیا ہے۔

امریکہ نے کچھ خاص قسم کے سٹیل کے پائیپوں پر دو سو چھیاسی فیصد درآمدی محصول عائد کرتے ہوئے کہا کہ اس پر حکومتوں کی جانب سے بےجا چھوٹ دی جا رہی ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ میں کام کرنے والے غیر ملکیوں کے لیے امریکی ویزے کی فیس میں اضافے پر بھارت کے چیلنج کے چند دنوں بعد امریکہ کی جانب سے سٹیل کی درآمدی محصول میں اضافے کا یہ فیصلہ سامنے آیا ہے۔

بھارت اور امریکہ کے مابین تنازعات کا سلسلہ جاری ہے جس سے یہ خطرہ لاحق ہو گیا ہے کہ دونوں ممالک کے تجارتی تعلقات متاثر ہو سکتے ہیں۔

گز شتہ ماہ دہلی کے ذریعہ امریکی کمپنیوں کی مصنوعات بشمول پولٹری اور مر‏غیوں کے انڈوں پر پابندی کے خلاف امریکہ بھارت کو عالمی تجارتی تنظیم میں لے گیا تھا۔

بھارت دنیا کے سب سے زیادہ سٹیل پیدا کرنے والے ممالک میں سے ایک ہے۔

بھارت کی سٹیل بنانے والی کمپنیاں زیادہ تر خام فولاد ملک کی سب سے بڑی کمپنی نیشنل منرل ڈیولمپنٹ کارپوریشن سے حاصل کرتی ہیں جو کہ حکومت کے کنٹرول میں ہے۔

یہ خدشات ظاہر کیے جا رہے ہیں کہ بھارتی حکومت عالمی بازار میں کم قیمت پر سٹیل فراہم کر رہی ہے جس سے ان کمپنیوں کو عالمی بازار میں بے جا سبقت حاصل ہو رہی ہے تاہم بھارت کا کہنا ہے کہ وہ سٹیل بنانے والی مقامی کمپنیوں کو بازار میں رائج قیمتوں پر ہی خام فولاد فروخت کر رہی ہے۔

بھارت کا یہ بھی کہنا ہے کہ این ایم ڈی سی بھارتی کمپنیوں کے علاوہ جاپان اور جنوبی کوریا کو بھی خام فولاد فراہم کرتی ہے۔

اسی بارے میں