بھارت، چھتیس گڑھ میں ضلع کا کلکٹر اغواء

الیکس پال تصویر کے کاپی رائٹ facebook
Image caption چھتیس گڈھ میں ماؤنواز باغیوں کی جانب سے حملے اور اس طرح کے واقعات عام ہیں

بھارت کی ریاست چھتیس گڑھ میں مبینہ ماؤنواز باغیوں نے ریاست کے سکما ضلع کے کلکٹر کو اغواء کر لیا ہے۔

بتایا جا رہا ہے کہ الیکس پال مینن ایک سرکاری پروگرام میں حصلہ لینے ضلع کے دورے پر آئے تھے تبھی موٹر سائیکل پر سوار کچھ لوگ آئے اور گولہ باری کی ۔

چھتیس گڈھ میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار سلمان راوی نے بتایا ہے کہ گولہ باری میں الیکس پال کے دو سیکورٹی گارڈ کی موت ہوگئی اور گاؤں کے دو لوگوں کو بھی گولی لگی ہے۔ موٹر سائیکل پر سوار افراد ضلع کلکٹر کو اپنے ساتھ لے گئے۔

یہ علاقہ نکسلی حملوں کے لحاظ سے بے حد حساس مانا جاتا ہے۔

ایک عین شاہد نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ ' گاؤں میں جاری پروگرام کے دوران اچانک پندرہ بیس افراد آئے اور حملہ بول دیا۔وہاں افرا تفری مچ گئی۔گولہ باری ہوئی۔ پھر پوچھنے لگے کہ کلکٹر کون ہے۔ کلکٹر صاحب نے کہا میں ہو کلکٹر، پھر وہ کلکٹر صاحب کو اپنے ساتھ لے گئے'۔

اس سے قبل جمعہ کو ریاست کے بیجاپور میں مبینہ ماؤنواز باغیوں نے بارودی سرنگ سےمیں دھماکہ کیا تھا اس میں بھارت میں حزب اختلاف کی جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے دو کارکنان ہلاک ہوگئے تھے۔ بیجاپور سکما ضلع کا قریبی ضلع ہے۔

اس سے قبل ماؤنواز باغیوں نے ریاست اڑیسہ میں دو اطالوی سیاحوں کو اغواء کر یرغمال بنالیا تھا جن کو حکومت سے بعض شرائط منوانے کے بعد رہا کردیا گیا تھا۔ حالانکہ یہاں ماؤنواز باغیوں نے اڑیسہ اسمبلی کے ایک رکن کو یرغمال بنایا ہوا ہے جن کی رہائی کا فیصلہ ماؤنواز باغیوں مطابق اس ماہ کی پچیس تاریخ کو کیا جائے گا۔

.

اسی بارے میں