بھارت: ریل حادثے میں پچیس افراد ہلاک

ٹرین حادثہ تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption حادثے میں سب سے زیادہ نقصان خواتین کے لیے مخصوص ڈبے کو پہنچا

بھارت کی جنوبی ریاست آندھرا پردیش میں ایک ریل حادثے میں کم از کم پچیس افراد ہلاک اور چالیس زخمی ہوگئے ہیں۔ ہلاک ہونے والوں میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں۔

یہ حادثہ منگل کی صبح تین بجے کے قریب اس وقت پیش آیا جب ہبلی سے بنگلور جانے والی مسافر ریل گاڑی ہمپی ایکسپریس بنگلور سے سو کلومیٹر کے فاصلے پر ایک کھڑی ہوئی مال گا‌‌‌ڑی سے ٹکراگئی۔

اس تصادم میں مسافر گاڑی کے تین ڈبوں کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ مقامی ضلع کی ڈی آئی جی چارو سنہا نے کہا ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں سے سولہ مسافر اس ڈبے میں جل گئے، جس میں حادثہ کے بعد آگ لگ گئی تھی۔

حکام نے بتایا کہ حادثے میں مرنے والے زیادہ تر لوگ وہ مزدور تھے، جو کام کے لیے بنگلور جا رہے تھے۔ کرناٹک کے وزیراعلی سداند گوڑا نے کہا ہے کہ ریاست کا جو شہری بھی اس حادثے میں ہلاک ہوا ہے اس کے لواحقین کو ایک لاکھ روپے زرِ تلافی کے طور پر دیے جائیں گے۔

بی بی سی کے نمائندے عمر فاروق کے مطابق یہ حادثہ ‏غلط سگنل کے سبب ہوا کیونکہ مسافر ٹرین کو اسی ٹریک پر ڈال دیا گیا جس پر پہلے سے ایک مال بردار ریل گاڑی کھڑی ہوئی تھی۔

اننت پور کے ڈسٹرکٹ میجسٹریٹ نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس حادثے میں سب سے زیادہ نقصان خواتین کے لیے مخصوص ڈبے کو پہنچا ہے۔ انہوں نے کہا ’مال گاڑی کو اسی ٹریک پر دیکھ کر ہمپی ایکسپریس کے ڈرائیور نے ایمرجنسی بریک لگا دی تھی ورنہ یہ حادثہ مزید تباہ کن ہو سکتا تھا۔‘

دوسری جانب دلی میں ایک ٹی وی چینل پر بات چیت کرتے ہوئے ریلوے کے ایک عہدیدار انیل سکسینا نے بتایا کہ اس حادثے میں انجن سے لگے ہوئے تین ڈبوں کو زیادہ نقصان پہنچا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پہلا ڈبا جو گارڈ اور سامانوں کا ڈبا تھا اس میں آگ بھی لگ گئی تھی لیکن اس پر اب قابو پایا جا چکا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ریلوے کے سینیئر اہل کار اور ڈاکٹروں کی ایک ٹیم وہاں پہنچ چکی ہے۔

اسی بارے میں