بھارت: صدارتی انتخابات کے شیڈول کا اعلان

Image caption اس وقت امیدوار کے لیے سب سے زیاد تذکرہ حکمران جماعت کے رہنما اور وزیر خزانہ پرنب مکھرجی کے نام کا ہو رہا ہے

بھارت کے انتخابی کمیشن نے اعلان کیا ہے کہ صدارتی انتخابات کا انعقاد انیس جولائی کو اور ووٹوں کی گنتی بائیس جولائی کو ہو گی۔

بھارت کی موجودہ صدر پرتیبھا پاٹل کی معیاد آئندہ ماہ چوبیس جولائی کو ختم ہو رہی ہے۔

نئی دلی میں بھارتی قومی انتخابی کمیشن کے نئے سربراہ وی ایس سمتھ نے انتخابی شیڈول کا اعلان ایک پریس کانفرنس میں کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ صدارتی انتخاب کے لیے سولہ جون کو نوٹیفیکیشن جاری کیا جائے گا اور انیس جولائی کو پولنگ ہوگي جبکہ نتیجہ بائیس جولائی کو ہی آنے کی توقع ہے۔

ملک میں اس وقت اس بات پر بحث جاری ہے کہ حکمراں جماعت کانگریس آخر کس کو صدر کے لیے اپنا امید وار منتخب کرتی ہے اور آیا صدر اتفاق رائے سے منتخب ہوگا یا پھر اپوزیشن اپنا امید وار بھی میدان میں اتارے گی۔

اس وقت امیدوار کے لیے سب سے زیاد تذکرہ حکمران جماعت کے رہنما اور وزیر خزانہ پرنب مکھرجی کے نام کا ہو رہا ہے لیکن کانگریس پارٹی کا کہنا ہے کہ وہ اس بارے میں پندرہ جون تک حتمی فیصلہ کرے گي۔

دوسرا نام نائب صدر حامد انصاری کا بھی ہے لیکن ان کے نام کا ذکر کم ہی ہو رہا ہے۔

دوسری جانب اس بارے میں مختلف سیاسی جماعتوں کے درمیان صلاح و مشورہ جاری ہے۔

اطلاعات کے مطابق کانگریس اس بارے میں اپنے اتحادیوں کو منانے میں لگی ہے اور اس کے بعد کوئی فیصلہ کریگی۔

لیکن اگر اتفاق رائے نہیں ہو سکا تو پھر حکمراں جماعت کے لیے مشکلیں پیدا ہو سکتی ہیں کیونکہ اکثریت کے لیے اسے دوسری علاقائی جماعتوں کی حمایت ضروری ہے۔

اسی بارے میں