امریکی سیاحوں کو بھارت میں محتاط رہنے کا مشورہ

اطالوی سیاح
Image caption انڈیا میں ماضی میں اغواء ہونے والا ایک اطالوی سیاح کسی نامعلوم مقام پر

امریکہ نے امریکی سیاحوں کے لیے ایک نیا ہدایت نامہ جاری کیا ہے جس میں بیرونِ ملک سفر کرنے والے امریکی شہریوں کو بھارت سمیت متعدد ممالک میں محتاط رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

امریکی وزارت خارجہ کی طرف سے جاری کی گئی ہدایت میں کہا گیا ہے کہ ’بھارت میں دہشت گردوں اور باغی گروپوں سے بدستور خطرہ بنا ہوا ہے اور جس میں امریکی شہری بالواسطہ اور براہ راست نشانہ بن سکتے ہیں ۔‘

پوری دنیا میں سفر کرنے والے امریکی شہریوں کے لیے جارے کیے گئے اس بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ کئی مغرب مخالف تنظیمیں جو کہ ممنوعہ تنظیموں کی امریکی فہرست میں شامل ہیں بھارت میں سر گرم ہیں۔ان میں اسلامی شدت پسند تنظیمیں حرکت الجہاد اسلامی، حر کت المجاہدین، انڈین مجاہدین، جیش محد اور لشکر طیبہ جیسی تنظیمیں اس خطے میں سرگرم ہیں۔

ہدایت نامے میں بھارت میں دہشت گردوں کے حملوں کے بعض پرانے واقعات کا ذکر کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ بھارت کے بڑے بڑے شہروں میں دہشت گردوں نے ماضی میں بڑے بڑے ہوٹلوں، ٹرین سٹیشنوں، بازاروں، سینما گھروں، مسجدوں اور ہوٹلوں کو اپنے حملے کا نشانہ بنایا ہے۔ ’شدت پسندوں نے کئی ایسے مقامات کو نشانہ بنایا ہے جہاں مغربی ممالک کے سیاح بڑی تعداد میں جاتے ہیں۔‘

امریکی وزارت خارجہ کے اس بیان میں امریکی شہریوں سے کہا گیا ہے کہ وہ بھارت جیسے ممالک میں اپنی سلامتی کے انتظامات کو بہتر کریں اور ہوشیار رہیں۔اس میں اس بات پر تشویش ظاہر کی گئی ہے کہ غیر ممالک میں امریکی شہریوں کے خلاف پُرتشدد مظاہروں، کارروائیوں اور دہشت گردی کے حملوں کا خطرہ بدستور برقرار ہے۔

امریکی ہدایت نامے میں کہا گيا ہے کہ ’تازہ معاملات سے پتہ چلتا ہے کہ القاعدہ اور اس کی حلیف تنظیمیں یورپ، ایشیاء، افریقہ اور مشرق وسطیٰ کے مختلف علاقوں میں امریکی شہریوں اور ان کے مفادات کو نشانہ بنانے کی تاک میں ہیں۔

اسی بارے میں