گجرات، کیشو بھائی پٹیل نےنئی پارٹی بنائی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گجرات میں مودی کے متبادل کی تیاری شروع ہوگئی ہے

بھارتی ریاست گجرات میں بی جے پی کے سابق سینیئر رہنما کیشو بھائی پٹیل نے ’گجرات پریورتن پارٹی‘ کے نام سے ایک نئی سیاسی جماعت بنانے کا اعلان کیا ہے۔

کیشو بھائی پٹیل نے سنيچر کے روز بھارتیہ جنتا پارٹی سے استعفیٰ دیا تھا اور پیر کے روز اپنی نئی سیاسی جماعت کا اعلان کیا۔

ریاستی دارالحکومت احمد آباد میں اپنی نئی جماعت کا اعلان کرتے ہوئے مسٹر پٹیل نے کہا کہ وہ اس برس ہونے والے اسمبلی انتخابات میں حصہ لیں گے۔

کیشو بھائی پٹیل گجرات کے سینیئر رہنما ہیں جن کا تعلق بی جے پی سے رہا ہے۔ دو ہزار ایک میں جب نریندور مودی کو دلی سے بلا کر گجرات حکومت کی باگ ڈور ان کے سپرد کی گئی تھی تو اس وقت وہی گجرات کے وزیر اعلیٰ تھے۔

نئی پارٹی کا اعلان کرتے ہوئے مسٹر پٹیل نے کہا کہ ان کی جماعت کا مقصد گجرات کا وقار بحال کرنا اور سبھی لوگوں کو ایک ساتھ لے کر چلنا ہے۔

پارٹی سے استعفیٰ دیتے ہوئے کیشو بھائی پٹیل کا کہنا تھا کہ جس طرح اس وقت پارٹی کام کرتی ہے اس سے وہ خوش نہیں ہیں۔

انہوں نے کہا ’میں پارٹی بڑے درد کے ساتھ چھوڑ رہا ہوں۔ موجودہ بی جے پی جمہوریت سے کوسوں دور جا چکی ہے اور عوام سے لا تعلق ہوچکی ہے۔‘

ان کا کہنا تھا کہ موجودہ حالات میں وہ خاموش نہیں رہ سکتے۔ ’یہی وجہ ہے کہ میں نے نئی جماعت بنانے کی سوچا جو اصل بی جے پی ہوگی۔ میرا مقصد گجرات کے لوگوں کو ایک بہتر متبادل پیش کرنا ہے۔‘

گجرات میں گزشتہ ایک عشرے سے بھی زیادہ سے نریندر مودی کی حکومت ہے اور کیشو بھائی پٹیل کی علحیدہ جماعت بنانے کا مقصد یہ ہوسکتا ہے کہ نریندر مودی کی مخالف جماعتیں ایک پلیٹ فارم جمع ہوسکتی ہیں۔

گجرات میں اسی برس کے اواخر میں اسبملی کے انتخابات ہونے والے ہیں۔ کیشو بھائی پٹیل کا تعلق پٹیل برادری سے ہے جو ریاست کی تقریبا سات فیصد آبادی ہے۔

اسی بارے میں