ممبئی میں پرتشدد مظاہروں کے بعد ہائی الرٹ

آخری وقت اشاعت:  اتوار 12 اگست 2012 ,‭ 22:49 GMT 03:49 PST

مشتعل ہجوم نے کئی گاڑیوں کو نذرِ آتش کر دیا

بھارت کی شمال مشرقی ریاست آسام میں ہونے والے فسادات کے خلاف ریاست مہاراشٹر کے دارالحکومت ممبئی میں ہونے والے پرتشدد مظاہروں میں دو افراد ہلاک ہوگئے۔

ریاستی حکومت نے تشدد کے واقعات کے بعد ممبئی سمیت مہاراشٹر بھر میں ہائی الرٹ کرنے اور حفاظتی انتظامات سخت بنانے کا اعلان کیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق سنیچر کو جنوبی ممبئی کے علاقے آزاد میدان میں ہزاروں افراد آسام میں ہلاکتوں کے خلاف مظاہرہ کرنے کے لیے جمع ہوئے۔

دیکھتے ہی دیکھتے اس ہجوم نے تشدد کی راہ اپنا لی اور متعدد گاڑیوں میں آگ لگانے کے علاوہ کئی بسوں کو بھی نقصان پہنچایا۔

اس پر پولیس نے حالات پر قابو پانے کے لیے ہوائی فائرنگ کی اور لاٹھی چارج بھی کیا۔

خبر رساں ایجنسیوں کے مطابق ان پرتشدد جھڑپوں میں کم از کم پچپن افراد زخمی ہوئے جن میں سے دو نے بعد میں ہسپتال میں دم توڑ دیا۔

خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق، ہلاک ہونے والوں کی شناخت محمد عمر اور الطاف شیخ کے طور پر ہوئی ہے۔ ان دونوں کو علاج کے لیے سینٹ جارج ہسپتال لایا گیا جہاں انہوں نے دم توڑ دیا۔

سنیچر کو رات گئے ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مہاراشٹر کے وزیراعلی پرتھوی راج چوان نے کہا ہے کہ ’اس واقعہ کے بعد ممبئی اور پوری ریاست میں ہائی الرٹ کا اعلان کر دیا گیا ہے اور سکیورٹی انتظامات سخت کر دیے گیے ہیں‘۔

بھارت کے مرکزی وزیر داخلہ سشیل کمار شندے نے ممبئی میں تشدد کی مذمت کی ہے اور لوگوں سے امن و امان برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے۔

انہوں نے افواہ پھیلانے والوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کی وارننگ بھی دی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔