’الفا باغیوں کی غیر آسامیوں پر حملے کی دھمکی‘

آخری وقت اشاعت:  اتوار 26 اگست 2012 ,‭ 12:22 GMT 17:22 PST
امدادی کیمپ، چرانگ، آسام

آسام میں بوڈو قبائل اور مسلمانوں کے درمیان تشدد میں پانچ لاکھ لوگ بے گھر ہو گئے ہیں۔

بھارت کی شمال مشرقی ریاست آسام کے دھبری ضلع میں تشدد کے تازہ واقعات کے بعد دو افراد کی لاشیں ملی ہیں۔

اس سے قبل سنیچر کو چرانگ ضلع میں پانچ لاشیں ملی تھیں اور آسام میں ان فسادات میں ہلاک ہونے والوں کی کل تعداد تراسی ہو گئی ہے۔

ادھر الفا باغیوں نے آسام سے باہر مقیم آسامی باشندوں پر ’مظالم‘ نہ رکنے کی صورت میں ریاست میں رہائش پذیر غیر آسامی آبادی پر حملوں کی دھمکی دی ہے۔

مقامی اخبار نویس ونود رنگانیہ نے بی بی سی کو بتایا کہ دھبری میں ملنے والی دونوں لاشیں مسلمانوں کی ہیں۔ تقریبا دو ماد سے جاری تشدد کے واقعات کے اثرات پورے ملک میں محسوس کیے جا رہے ہیں۔

اگر ایک جانب تشدد کے واقعات رکنے کا نام نہیں لے رہے ہیں تو دوسری جانب ایک خبر رساں ایجنسی آئی اے این ایس کے مطابق الفا کے رہنما نے نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اگر بھارت کے دوسرے علاقوں میں آسامی باشندوں پر مظالم نہیں رکے تو آسام میں رہنے والے غیر آسامیوں پر حملے کیے جائیں گے۔

اس بیان میں جس پر الفا کے فرار رہنما پریش بروا کے دستخط ہیں الزام لگایا گیا ہے کہ مین لینڈ بھارت میں چودہ آسامیوں کو مارا گیا ہے۔

سنیچر کو ہونے والی ہلاکتیں چرانگ ضلعے کے تشدد زدہ علاقے بجنی قصبے میں ہوئی تھیں جس کے بعد ریاستی پولیس نے غیر معینہ مدت کے لیے کرفیو نافذ کر دیا ہے۔

آسام میں قانون نافذ کرنے والے ادارے کے ڈائرکٹر جنرل ایل آر بشنوئی نے بھارتی خبررساں ایجنسی کو بتایا کہ چرانگ میں پانچ لوگوں کی موت چاقو مارنے سے ہوئی تھی۔ انھوں نے کہا کہ اس سانحے کے بعد علاقے میں مزید حفاظتی دستے تعینات کر دیے گئے ہیں۔

بوڈو قبائل اور مسلمانوں کے درمیان قریب دو ماہ سے جاری تشدد کے نتیجے میں قریب پانچ لاکھ لوگ اپنا گھربار چھوڑنے پر مجبور ہو گئے ہیں۔

ریاست کے کوکراجھار، چرانگ اور دھبری ضلعے تشدد سے سب سے زیادہ متاثر ہیں۔ واضح رہے کہ کوکراجھار اور چرانگ میں قائم امدادی کیمپوں سے بوڈو قبائل اپنے گھر لوٹنے لگے ہیں لیکن دھبری کے امدادی کیمپوں میں مسلمان ابھی بھی مکین ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔