بنگلور میں کوڑا کرکٹ کا بحران

آخری وقت اشاعت:  اتوار 2 ستمبر 2012 ,‭ 09:54 GMT 14:54 PST
کوڑے، بنگلور

کوڑے کو صحیح ڈھنگ سے ٹھکانے لگانا ہر بڑے شہر کے لیے ایک اہم مسئلہ ہے۔

بھارت میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کا مرکز سمجھے جانے والے شہر بنگلور کو شہر میں ہزاروں ٹن کوڑا اکٹھا ہو نے کی وجہ سے مسائل کا سامنا ہے۔

شہر کو صاف رکھنے کے لیے یہ کوڑا شہر کے نواحی دیہات میں پھینکا جا رہا تھا لیکن اب ان دیہاتیوں نے اس عمل کی مخالفت کی ہے۔

بنگلور سے متصل منڈور گاؤں کی پنچایت کے ایک رکن منی راجو نے کہا کہ ’ہماری صحت بھی اسی قدر اہم ہے جس قدر شہر والوں کی اہم ہے۔ ہم اپنے گھروں کے پچھواڑے کوڑا پھینکنے کے اس سلسلے کو چلنے نہیں دیں گے‘۔

اس رد عمل کے نتیجے میں شہر میں روزانہ قریب پینتالیس لاکھ کلو کوڑے کو ٹھکانے لگانا ایک بڑا مسئلہ پیدا ہو گیا ہے۔

بنگلور میں کوڑا اکٹھا کر کے اسے ٹھکانے لگانے کی تین جگہیں ہیں، ان میں سے ایک بنگلور کے باہر موالی پورہ میں ہے جسے جولائی میں اس لیے بند کر دیا گیا کہ وہاں سائنسی طور پر کوڑے کو ٹھکانے نہیں لگایا جا رہا تھا۔

اس کے علاوہ دو ديگر مقامات پر جہاں کوڑا ٹھکانے لگایا جاتا ہے اس کے پاس آباد دیہات والوں نے اس کے خلاف آواز بلند کی ہے اور کوڑا ڈھونے والی گاڑیوں اور ٹرکوں کو روک دیا ہے۔

دریں اثناء گریٹر بنگلورو میونسپلٹی کے اہل کار بھی بہتر تنخواہ اور وقت پر ادائیگی کی مانگ کے ساتھ ہڑتال پر چلے گئے تھے۔ حالانکہ یہ ہڑتال صرف تین دن تک ہی جاری رہی لیکن اس کے اثرات ابھی تک نظر آ رہے ہیں۔

بنگلور کے میئر نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا یہ مسئلہ صحت کے بنیادی مسئلے کی وجہ سے دونوں گاؤں کی مخالفت کے بعد پیدا ہوا ہے۔

انھوں نے کہا کہ اس سلسلے میں حکام ایسی جگہوں کی تلاش میں سرگرم جہاں ان کوڑے ڈھیروں کو ٹھکانے لگایا جاسکے جو شہر میں پڑے سڑ رہے ہیں اور بدبو کا باعث بن رہے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔