ریٹیل بازار میں بیرونی سرمایہ کاری کی اجازت

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 14 ستمبر 2012 ,‭ 14:10 GMT 19:10 PST
سپر اسٹور

بھارت میں سپر اسٹور کی مخالفت کی جا رہی ہے

بھارت نے ریٹیل بازار میں بیرونی سرمایہ کاری پر فیصلہ لیتے ہوئے سنگل برانڈ میں سو فیصد جبکہ ملٹی برانڈ میں اکیاون فیصد تک کی سرمایہ کاری کی اجازت دے دی ہے۔

کابینہ کے اس فیصلے کے بعد وال مارٹ اور ٹیسکو جیسی بڑی بین الاقوامی کمپنیوں کو خوردہ بازار میں آنے اور سپر سٹورز کھولنے کی راہ ہموار ہو جائے گی۔

جمعہ کو اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے حکومت کی ترجمان اور اطلاعات ونشریات کی وزیر امبیکا سونی نے کابینہ کے اس فیصلے کا اعلان کیا۔

اس سے قبل گذشتہ سال اس مسئلے پر کُل جماعتی اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا تھا کہ اس معاملے پر اتفاقِ رائے سے عمل کیا جائے گا۔

اس فیصلے پر حزب اختلاف کی پارٹیوں نے شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ حکومت اپنی ناکامیوں کو چھپانے کی کوشش کر رہی ہے۔

ایف ڈی آئی کے خلاف مظاہرہ

نومبر دوہزار گیارہ میں ایف ڈی آئی کے خلاف مظاہرہ عمل میں آیا تھا۔

حزب اختلاف کی سب سے بڑی جماعت بی جے پی نے حکومت کے اس فیصلے کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ ’یہ جمہوریت کے ساتھ دھوکہ ہے۔‘

کانگریس کی حلیف جماعت ترنامول کانگریس نے بھی اس فیصلے کی مخالفت کی ہے۔

حکومت نے گذشتہ نومبر کے آخر میں بڑی کمپنیوں کی خوردہ کاروبار میں شرکت کی راہ ہموار کرتے ہوئے اس شعبے میں اکیاون فیصد براہِ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کی اجازت دی تھی۔

لیکن اس فیصلے سے کانگریس کی اتحادی جماعتیں بھی ناراض تھیں اور وہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے ساتھ مل کر پارلیمان کی کارروائی چلنے نہیں دے رہی تھیں۔ ان کا مطالبہ تھا کہ حکومت اپنا فیصلہ واپس لے اور اس مسئلہ پر پارلیمان میں بحث کی جائے جس کے بعد حکومت نے اس فیصلے کو التوا میں ڈال دیا تھا۔

اس فیصلے کی مخالفت کرنے والی جماعتوں کا دعویٰ ہے کہ بڑی کمپنیوں کی آمد سے کسانوں کے استحصال کا سلسلہ شروع ہوگا اور ملک سے چھوٹےکاروبار ختم ہوجائیں گے۔

لیکن حکومت کا کہنا ہے کہ بہت سے دوسرے ملکوں کا تجربہ یہ رہا ہے کہ بھارت جیسے بڑے ملک میں چھوٹے اور بڑے کاروبار ساتھ ساتھ کام کر سکتے ہیں اور جو ریاستیں اس فیصلے کا اطلاق نہیں کرنا چاہتیں ان پر کوئی پابندی نہیں ہے کیونکہ ان پر کسی کے ساتھ زبردستی نہیں کی جا سکتی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔