بھارتی شہر میں تاريخی سرنگ کا افتتاح

آخری وقت اشاعت:  اتوار 30 ستمبر 2012 ,‭ 17:20 GMT 22:20 PST
جے پور میں سرنگ کا افتتاح

امبر پیلس اور جے گڑھ قلع کے درمیان جے پور میں سرنگ کا افتتاح

کہانیوں میں اکثر یہ سننے میں آتا ہے کہ کسی محل میں خفیہ سرنگ ہوا کرتی تھی لیکن آج بھارت کے شہر جے پور میں یہ بات پوری کر دی گئی ہے۔

اتوار سے اس سرنگ کا افتتاح کر دیا گیا ہے جس بارے میں کافی باتیں ہوا کرتی تھیں۔ یہ سرنگ امبر پیلس کو جے گڑھ قلعہ سے جوڑتی ہے۔

سیاحت کی وزیر بینا کاک نے جے پور کے سابق شاہی خاندان سے تعلق رکھنے خاتون والی ویدیا کماری کے ساتھ اس کا افتتاح کیا۔

واضح رہے کہ گذشتہ نوے سال سے یہ سرنگ استعمال میں نہیں تھی۔

بیٹری سے چلنے والی گولف گاڑی سیاحوں کو اس سرنگ کے ذریعے ایک تاريخی مقام سے دوسرے تاریخی مقام تک لائے اور لے جائے گی۔

چار سو پچاس میٹر لمبی سرنگ میں گولف گاڑی پر وزیر سیاحت نے دیویا کماری کے ساتھ سفر کیا۔

اس کا افتتاح کر تے ہوئے وزیر سیاحت نے کہا کہ جے پور کی تاريخ میں یہ دن اہم ہے کیونکہ امبر اور جے گڑھ کے درمیان اس سرنگ کو از سر نو شروع کر دیا گیا ہے۔

وزیر سیاحت اور دیویا کماری

جے پور میں سرنگ کا افتتاح وزیر سیاحت اور دیویا کماری نے کیا۔

انھوں نے مزید کہا: ’ہمیں امید ہے کہ سیاح اس سے گذرنا پسند کریں گے۔‘ انھوں نے سابق شاہی خاند ان کی دلچسپیوں کی بھی تعریف کی۔

دیویا کماری نے اس موقع پر کہا کہ ’اس سے شہر کی سیاحت کو مزید فروغ ملے گا۔‘

انھوں نے یہ بھی وعدہ کیا کہ سٹی پیلس سے ایسی مزید سرنگوں کا پتہ چلانے کی کوشش کی جائے گی۔

فی الحال ایک ایسی ہی سرنگ پر کام جاری ہے جو امبر پیلس سے گنیش پول تک جا رہی ہے۔ یہ تین سو پچیس میٹر لمبی ہے اور اس پر پبلک پرائیویٹ پراجکٹ کے تحت کام کیا جا رہا ہے۔

فی الحال سرنگ میں جانے کے لیے کوئی ٹکٹ نہیں ہے لیکن گولف گاڑی کے استعمال پر ستّر روپے ایک طرف سے اور سو روپے دونوں جانب سے رکھے گئے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔