وال مارٹ: کئی بھارتی عہدیدار معطل

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 23 نومبر 2012 ,‭ 11:56 GMT 16:56 PST
والمارٹ کی ایک فوٹو

بھارت نے چند ماہ قبل ہی بیرونی کمپنیوں کو ریٹیل مارکیٹ میں اکاون فیصد سرمایہ کاری کی اجازت دی ہے۔

امریکی کمپنی وال مارٹ نے بھارت میں اپنی پارٹنر کپمنی کے کئی اعلیٰ عہدیداروں کو رشوت ستانی کی تحقیقات کے دوران معطل کر دیا ہے۔ وال مارٹ بھارت میں اپنے آپریشن شروع کرنے کا اعلان کر چکی ہے۔

امریکی قوانین کے مطابق بیرونی ملک میں تجارت کے فروغ یا اس کے استحکام کے لیے کوئی بھی امریکی کپمنی رشوت ادا نہیں کر سکتی۔ وال مارٹ اسی بات کی تفتیش کر رہا ہے کہ کہیں بھارت میں اس امریکی قانون کی خلاف ورزی تو نہیں ہوئي۔

اطلاعات کے مطابق کمپنی نے مالیات اور قانونی ٹیم کے افسران کو معطل کیا ہے۔ کمپنی نے اس بارے میں مزید تفصیلات فراہم نہیں کی ہیں۔

وال مارٹ کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ’:ہم مکمل تفتیش کرنے کے لیے پر عزم ہیں۔‘

انڈیا میں بھارتی نامی کمپنی وال مارٹ کی پارٹنر ہے۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ چین، برازيل اور میکسیکو میں بھی ایسی ہی تحقیقات کر رہا ہے۔

"ہم ایک مکمل جانچ کرنے کے لیے پر عزم ہیں۔ وال مارٹ اور بھارتی نے اپنے کچھ ساتھیوں کو تفتیش کے مکمل ہونے تک معطل کر دیا ہے۔"

بھارت نے چند ماہ قبل ہی سپر مارکیٹ میں بیرونی کمپنیوں کو سرمایہ کاری کرنے کی اجازت دی ہے۔ اس قانون کے مطابق بیرونی کمپنیاں ریٹیل سٹوروں میں اکاون فیصد تک کی شراکت کر سکتی ہیں۔

انڈیا میں وال مارٹ بھارتی کے ساتھ ہول سیل بازار میں پہلے ہی موجود ہے اور آئندہ دو برسوں میں وہ ریٹیل سٹور کھولنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ رشوت ستانی سے متعلق تحقیق سے بھارت میں اس کی توسیع کا منصوبہ متاثر نہیں ہوگا اور وہ بھارتی بازار کے لیے اپنے وعدے پر قائم ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔