آئی کے گجرال نہیں رہے

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 30 نومبر 2012 ,‭ 12:13 GMT 17:13 PST
اندر کمار گجرال

اندر کمار گجرال ایک برس کے لیے بھارت کے وزیر اعظم رہے

بھارت کے سابق وزیراعظم اندر کمار گجرال طویل علالت کے بعد بانوے برس کی عمر میں انتقال کر گئے ہیں۔ انہيں انیس نومبرکو دلی کے نواحی شہر گڈگاؤں کے میدانتا ہسپتال میں داخل کرایا گيا تھا جہاں جمعہ کو وہ چل بسے۔

اِندر کمار گجرال کو پھیپھڑوں میں انفیکشن کی شکایت کے بعد ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا جہاں انہیں دو دن قبل وینٹیلیٹر پر رکھا گیا تھا۔

اطلاعات کے مطابق ان کے جسم کے مختلف اعضاء نے کام کرنا بند کردیا تھا جس کی وجہ سے جمعہ کی دوپہر تین بج کر ستائیس منٹ پر ان کا انتقال ہو گیا۔

بھارتی پارلیمان میں جاری اجلاس کے دوران وزیر داخلہ سشیل کمار شندے نے ان کی وفات کا اعلان کیا جس کے بعد پارلیمانی اجلاس کو ایک دن کے لیے معطل کردیا گيا۔

اندر کمار گجرال آئی کے گجرال کے نام سے زیادہ جانے جاتے تھے۔ اطلاعات کے مطابق ان کی آخری رسومات سنیچر کی دوپہر دلی میں ادا کی جائیں گی۔

آئی کے گجرال اپریل انیس سو ستانوے سے مارچ انیس سو اٹھانوے تک جنتا دل پارٹی کی حکومت میں بھارت کے وزیر اعظم رہے تھے۔

بھارت کے وزیر اعظم کے عہدے کے علاوہ وہ ملک کے وزیر خارجہ اور اطلاعات اور نشریات کے وزیر بھی تھے۔

آئی کے گجرال کا خاندان تقسیم ہند کے بعد پاکستان سے بھارت آیا تھا۔ آئی کے گجرال کا جنم چار دسمبر انیس سو انیس میں ہوا تھا اور انہوں نے آزادی ہند کی تحریک میں سرکردہ کردار ادا کیا تھا۔

آئی کے گجرال ایچ ڈی دیوی گوڑا کے بعد بھارت کے دوسرے وزیر اعظم تھے جو بغیر اتنخابات میں حصہ لیے راجیہ سبھا کے رکنیت کی بنیاد پر ملک کے وزیر اعظم بنے۔

اندر کمار گجرال ہندی اور انگریزی کے علاوہ اردو زبان پر مہارت رکھتے تھے اور انہیں اردو شاعری کا خاص شوق تھا۔

اندر کمار گجرال بھارت اور پاکستان کے درمیان دوستانہ رشتوں کے حامی تھے اور انہیں پاکستان اور بھارت کے درمیان ’پل‘ کہا جاتا تھا

.اندر کمار گجرال نے بھارت اور پاکستان کے لوگوں کے درمیان رابطے بڑھانے کے لیے کام کیا ہے اور آج بھی پاکستان میں ان کے بہت سے قریبی دوست موجود ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔