بھارت معیشت سست روی کا شکار

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 30 نومبر 2012 ,‭ 07:55 GMT 12:55 PST
پیداوار

بھارت میں مصنوعات کی پیداوار میں کمی سے معیشت کی ترقی کی رفتار میں کمی کا خدشہ ہے۔

بھارتی معیشت کی ترقی کی شرح سال کے تیسرے ربع میں جولائی اور ستمبر کے درمیان سست روی کا شکار ہو گئی ہے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ اس سے حکومت کو اصلاحات پر عمل در آمد کرنے اور مالیاتی پالیسی میں نرمی برتنے میں دقت پیش آئے گی۔

گزشتہ سال کے مقابلے میں ان تین مہینوں میں ترقی کی شرح پانچ اعشاریہ تین فی صد رہی اور یہ دوسرے ربع کی ترقی کی شرح پانچ اعشاریہ پانچ سے بھی کم رہی۔

بھارت نے اپنی معیشت کی ترقی کی شرح میں اضافے کے لیے کئی اقدام کیے جن میں خوردہ بازار اور ہوابازی کے شعبے میں بیرونی ممالک کی سرمایہ کاری کے دروازے کھولنے کے اقدامات بھی شامل ہیں۔

بہر حال تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ ترقی کی شرح میں تیزی لانے کے لیے مزید اقدامات کی ضرورت ہے۔

بھارتی سٹیٹ بینک کے ماہر معاشیات برندا جاگیردار کا کہنا ہے کہ بھارت کے مرکزی بینک کو سود کی شرح میں کمی کرنے کی ضرورت ہے تاکہ معیشت کی ترقی کی رفتار کی بحالی ہو سکے۔

بھارت کے مرکزی بینک یعنی ریزرو بینک آف انڈیا نے اب تک شرح سود کو کم کرنے کیے مطالبات کی یہ کہتے ہوئے مخالفت کی ہے کہ اس کا ہدف مہنگائی کوقابو میں رکھنا ہے۔

روپیہ

بھارتی معیشت کی ترقی کی رفتار کو تیز کرنے کے لیے شرح سود میں کمی کو ضروری قرار دیا جا رہاہے۔

بہر حال مسز جاگیردار کا کہنا ہے کہ ’ترقی کی شرح میں وسیع پیمانے پر سست روی آ چکی ہے اس لیے اب توجہ مہنگائی کے بجائے ترقی پر ہونی چاہیے۔‘

انھوں نے مزید کہا ’ترقی ناگزیر ہو چکی ہے کیونکہ سرمایہ کاری میں مسلسل سست روی سے کھپت رک سی گئی ہے۔‘

اس سے قبل اقتصادی ماہرین نے کہا تھا کہ صنعتی پیداوار اور اقتصادی ترقی کی گرتی رفتار ملک کو درپیش اقتصادی چیلنجوں کی عکاس ہے۔

واضح رہے کہ معاشی ترقی کی موجودہ رفتار گزشتہ دو برسوں میں سب سے سست ہے اور اس سے معلوم ہوتا ہے کہ بے قابو مہنگائی، سود کی بلند شرح اور غیر یقینی عالمی اقتصادی صورتحال سے معیشت کس قدر متاثر ہو رہی ہے۔

چین اور جاپان کے بعد بھارت ایشیا کی تیسری سب سے بڑی معیشت ہے لیکن ملک میں مہنگائی مسلسل دس فیصد کے قریب رہی ہے جس میں اب تھوڑی کمی آئی ہے۔

یاد رہے کہ مہنگائی پر قابو پانے کے لیے حکومت نےگزشتہ ڈیڑھ سال میں سود کی شرح میں کئي مرتبہ اضافہ کیا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔