نرس جیسنتھا کی لاش منگلور پہنچ گئی

آخری وقت اشاعت:  اتوار 16 دسمبر 2012 ,‭ 14:17 GMT 19:17 PST
جیسنتھا سلدانہ

جیسنتھا سلدانہ سات دسبمر کو اپنے گھر میں مردہ پائی گئی تھیں

برطانیہ کے کنگ ایڈورڈ ہسپتال میں زیر علاج شہزادہ ولیم کی اہلیہ کیتھرین تک ایک جعلی کال کی رسائی دینے والی بھارتی نژاد نرس جیسنتھا سلدانہ کی لاش ان کے آبائی شہر منگلور پہنچ گئی ہے۔

جیسنتھا کے خاوند اور ان کے دو بچے جیسنتھا کی آخری رسومات کی ادائیگی کے لیے پہلے ہی منگلور پہنچ چکے ہیں۔

جیسنتھا وہی نرس ہیں جنہوں نے دسمبر میں ہسپتال میں زير علاج کیٹ مڈلٹن کا احوال جاننے کے لیے ایک آسٹریلیائی ریڈیو جوکی کی جانب سے کی گئی مزاحیہ فون کال کو شہزادی کے چیمبر تک پہنچایا تھا۔

اس واقعہ کے منظر عام پر آنے کے بعد سات دسبمر کو جینستھا کنگ ایڈروڈ ہسپتال سے تھوڑے ہی فاصلے پر واقع اپنے گھر میں مردہ پائی گئی تھیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ جیسنتھا نے خودکشی کی تھی۔

جیسنتھا کا تعلق جنوبی بھارت کے شہر منگلور سے ہے جہاں ان کے سسرال والے اور ان کی ماں رہتی ہیں۔

بی بی سی کے نامہ نگار سنجے مجمدار اس وقت منگلور میں ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ جیسنتھا کی لاش کو لینے کے لیے کئی مقامی سیاست داں اور حکومت کے نمائندے منگلور ائیرپورٹ پہنچے تھے۔

اطلاعات کے مطابق جیسنتھا کی آخری رسومات پیر کو مقامی وقت کے مطابق چار بجے ادا کی جائے گی۔

جیسنتھا کی آخری رسومات کرناٹک کے شہر اور جیسنتھا کے گاؤں اوڈیپا کے شرواہ گاؤں کے ’لیڈی آف ہیلتھ چرچ‘ میں ادا کی جائیں گی۔

پولیس نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا ہے کہ جیسنتھا کی آخری رسومات میں تقریباً پانچ ہزار افراد کی شرکت متوقع ہے۔

جیسنتھا کے گا‎‎ؤں میں سکیورٹی کےسخت انتظامات کیے گئے ہیں۔

جیسنتھا نے منگلور کے جس ہسپتال میں نرس کی تربیت حاصل کی تھی اس ہسپتال کا کہنا ہے وہ جلد ہی ان کی یاد میں ایک ایوارڈ کا اعلان کرے گا۔

جیسنتھا کی موت کن حالات میں ہوئی اس کی ابھی تفتیش جاری ہے حالانکہ کنگ ایڈورڈ ہسپتال کی انتطامیہ کا کہنا ہے کہ انہوں نے جیسنتھا کو کئی بار اس بات کی یقین دہانی کرانے کی کوشش کی کہ آسٹریلیائی ریڈیو جوکی کی جانب سے کی گئی مزاحیہ فون کال کا جواب دینے کے لیے ان کو ذمہ دار نہیں ٹھہرایا جائے گا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔