کوٹا نہ دیے جانے پر جاٹ کریں گے دلی کا گھیراؤ

آخری وقت اشاعت:  پير 17 دسمبر 2012 ,‭ 16:28 GMT 21:28 PST
 سیکورٹی

ہریانہ حکومت نے جسٹس کے سی گپتا کی قیادت والی کمیٹی کی اس رپورٹ کو تسلیم کرلیا ہے جس میں جاٹو سمیت دیگر چار طبقوں کو دس فی صد ریزرویشن دینے کی سفارش کی گئی ہے

ریاست ہریانہ کی جاٹ برداری کے رہنماؤں کا کہنا ہے کہ سرکاری نوکریوں اور تعلیمی اداروں میں ان کو ریزرویشن (کوٹا) نہ دیے جانے پر وہ احتجاج کے طور پر دلی کا گھیراؤ کریں گے۔

آل جاٹ کھاپ ریزرویشن کمیٹی اور جاٹ ریزرویشن سنگھرش کمیٹی سے وابستہ لوگوں نے اعلان کیا ہے کہ وہ سرکاری نوکریوں اور تعلیمی اداروں میں جاٹوں کے ریزرویشن کے مسئلے پر دلی کا گھیراؤ کریں گے۔

ویسے تو ہریانہ حکومت نے جسٹس کے سی گپتا کی قیادت والی کمیٹی کی اس رپورٹ کو تسلیم کرلیا ہے جس میں جاٹوں سمیت دیگر چار طبقوں کو دس فی صد ریزرویشن دینے کی سفارش کی گئی ہے، لیکن ان تنظیموں نے ہریانہ کے وزیر اعلیٰ بھوپندر سنگھ ہوڈا کے اس فیصلے کو سنجیدگی سے لینے سے انکار کر دیا ہے۔

آل جاٹ کھاپ ریزرویشن کمیٹی کے سربراہ نفع سنگھ کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کے حکم سے پہلے یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ سرکاری نوکریوں میں مخصوص طبقوں کو پچاس فی صد سے ریزرویشن نہیں دیا جاسکتا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ سرکاری نوکریوں اور تعلیمی اداروں میں نچلی ذاتوں کو بائیس فی صد ریزرویشن اور دیگر پسماندہ طبقوں کو پہلے ہی ستائیس فی صد ریزرویشن دیا جاتا ہے۔

نفع سنگھ کا کہنا ہے کہ وہ چاہتے ہیں انہیں دیگر پسماندہ طبقوں کو دیے جانے والے ستائیس فی صد ریزرویشن میں سے دس فی صد ریزرویشن دیا جائے۔

دلی کو گھیرنے کے اعلان سے متعلق جاٹ سنگھرش کمیٹی کا دعویٰ ہے کہ ان کی تنظیم کے لوگ روہتک، حصار، سرسا، جند، فتح آباد اور دلی کے بہادر گڑھ سے آنے والے راستے بند کر دیں گے۔ دوسری جانب وہ انبالہ، کروشیتر، کرنال، پانی پت، اور سونی پت کے دلی کی کنڈلی سرحد پر دھرنا دیں گے۔

ہریانہ کے ایک سینئر صحافی ہیمنت آتری کا کہنا ہے کہ ’جو بھی لیڈران یہ تحریک چلانے کی کوشش کررہے ہیں وہ کوئی بہت بڑے لیڈر نہیں ہیں لیکن یہ ایک جذباتی مسئلہ ہے جس کی وجہ سے انہیں جاٹ برادری کی حمایت حاصل ہوسکتی ہے۔‘

ان کا کہنا ہے کہ ’یہ ریاست میں کانگریس لے جاٹ ووٹ کو توڑنے کی کوشش ہے کیونکہ روایتی طور پر جاٹ برادری ہمیشہ متحد ہوکر رہی ہے۔‘

ہریانہ میں آبادی کے لحاظ سے تقریبا بائیس فی صد جاٹ ہیں اور سماجی طور پر یہ خاصے سرگرم ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔