گنگا میں آلودگی پھیلانے کے خلاف مہم

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 21 دسمبر 2012 ,‭ 17:38 GMT 22:38 PST

دریائے گنگا کو آلودہ کرنے ولے سو سے زائد کارخانوں کو بند کرنے کا حکم دیا گیا ہے

بھارت کی ریاست اتر پردیش میں حکام نے مقدس دریائے گنگا کو آلودہ کرنے والی صنعتوں کے خلاف مہم شروع کر دی ہے۔ اس مہم کا آغاز آئندہ مہینے آلہ آباد میں ہونے والے کمبھ میلہ شروع ہونے کے مدنظر کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ آئندہ سال چودہ جنوری سے دس مارچ تک کمبھ میلہ منعقد ہوگا۔ توقع ہے کہ اس میلے کے دوران دس کروڑ سے زیادہ زائرین دریائے گنگا میں آلہ آباد کے مقام پر نہانے کے لیے آئیں گے۔

محکمۂ ماحولیات کے ایک سینیئر اہل کار کے مطابق ضوابط کی خلاف ورزی کرنے کی بنیاد پر سو سے زیادہ کشیدگی اور چمڑے کے کارخانے بند کرنے کے احکامات جاری کیے گئے ہیں۔

کارخانوں کو بند کرنے کے احکامات اتر پردیش کے پلوشن کنٹرول بورڈ نے جاری کیے ہیں۔ پلوشن کنٹرول بورڈ کو خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانون کے تحت کارروائی کرنے کے اختیارات حاصل ہیں۔

آلودگی پھیلانے والے زیادہ تر کارخانے مغربی اور مرکزی اترپردیش میں واقع ہیں۔

کمبھ میلے کے دوران توقع ہے کہ دس کروڑ سے زائد زائرن گنگا میں نہانے کے لیے آئیں گے

پلوشن کنٹرول بورڈ کے سیکرٹری جے ایس یادیو کے مطابق کانپور میں چمڑے کے کچھ کارخانے پابندی کے باوجود چلتے ہوئے پائے گئے۔

اس پر حمکمۂ ماحولیات کے ایک سینیئر اہل کار کا کہنا تھا کہ حکومت نے آلودگی پھیلانے والے کارخانوں کی طرف سے حکم عدولی کرنے کے اقدام کو سنجیدگی سے لیا ہے۔

ریاست کے چیف سیکرٹری جاوید عثمانی نے کمبھ میلے کے دوران صاف پانی لازماً مہیا کرنے کے لیے انتظامہ کی اجلاس منعقد کی تھی۔

انہوں نے ضلعی حکام کو ہدایت کی تھی کہ جو کارخانے گنگا اور اس کے شاخوں کو آلودہ کرنے کے مرتکب پائے گئے تو اس کو بجلی کی فراہمی منقطع کی جائے۔

جاوید عثمانی نے گنگا کو آلودگی سے بچانے کے لیے اترکھنڈ ریاست سے بھی مدد مانگی ہے۔

ایک بیان کے مطابق چیف سیکرٹری نے کمبھ میلے کے دوران تہری ڈیم سے گنگا میں 2500 کیوسک پانی کے اخراج کے ہدایت بھی جاری کیے ہیں۔ ڈیم سے اضافی پانی کے اخراج کا مقصد کمبھ میلے کے دوران وافر مقدار میں پانی مہیا کرنا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔