بھارت کا پاکستانی جاسوس کو گرفتار کرنے کا دعوی

آخری وقت اشاعت:  منگل 26 فروری 2013 ,‭ 04:01 GMT 09:01 PST

اس میبنہ جاسوس کو جو کہ ایک بھارتی شہری ہے کو بھارت کی ریاست راجھستان سے گرفتار کیا گیا

بھارت میں پولیس نے یہ دعویٰ کیا ہے کہ اس نے ایک شخص کو گرفتار کیا ہے جس پر شبہ ہے کہ وہ پاکستان کو بھارت کے فوجی راز فراہم کیا کرتا تھا۔

اس بھارتی شہری کو بھارت کی ریاست راجھستان سے گرفتار کیا گیا جو کہ پاکستان کی سرحد کے ساتھ ملحق ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس شخص نے مبینہ طور پر گزشتہ ہفتے پاکستان کے خفیہ ادارے آئی ایس آئی کو انہیں دنوں میں ہونے والی فوجی مشقوں سے متعلق معلومات بھجوائی تھیں۔

بھارت اور پاکستان اکثر ایک دوسرے پر جاسوسی کے الزامات عائد کرتے رہتے ہیں اور یہ گرفتاری ان دنوں میں ہوئی ہے جب لائن آف کنٹرول پر ہونے والے بعض واقعات کے وجہ سے دونوں ممالک میں کشیدگی رہی ہے۔

ایک اعلیٰ پولیس اہلکار ڈی ایس ڈنکر نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ ’اس مبینہ جاسوس پر الزام ہے کہ اس نے بھارت کے دفاعی تنصیبات اور فوجی کارروائیوں سے متعلق راز پاکستان کو بھجوائے۔‘

ایک اور اطلاع یہ ہے کہ کہ اس شخص کی طرف سے اس کے ایک پاکستانی رشتہ دار کو کی جانے والی کالوں کا پتہ چلایا گیا ہے جو کہ مبینہ طور پر آئی ایس آئی کے لیے کام کرتا ہے۔

اس شخص کو اس کے گھر پر فوجی انٹیلیجنس نے گرفتار کیا جو کہ پوکھران کے علاقے کے ایک گاؤں میں واقع ہے اور اب مختلف ایجنسیاں اس سے سوال جواب کر رہی ہیں۔

اس شخص کو جے پور کی ایک عدالت میں سوموار کو پیش کیا گیا جہاں انہیں ریمانڈ میں دینے کا فیصلہ کیا گیا۔

یاد رہے کہ وزیر اعظم منموہن سنگھ اور صدر پرنب مکھرجی دونوں نے ان فوجی مشقوں میں شرکت کی تھی جن فوجی مشقوں کے بارے میں اس شخص پر الزام ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔