رشوت لینے کے الزام میں 36 پولیس اہلکار معطل

Image caption ماہرین کے مطابق ممبئی پولیس میں رشوت کا بازار گرم ہے

بھارتی ریاست مہاراشٹر کے صنعتی شہر ممبئی میں 36 پولیس اہلکاروں کو رشوت لینے یا اس کا مطالبہ کرنے کے الزام میں معطل کر دیا گیا ہے۔

یہ تمام پولیس اہلکار مرکزی ممبئی کے نہرو نگر (كرلا) پولیس تھانے سے وابستہ تھے۔

ان پولیس اہلکاروں کو ایک سٹنگ آپریشن میں مبینہ طور پر رشوت لیتے ہوئے یا اس کا مطالبہ کرتے ہوئے دکھایا گیا تھا۔

یہ سٹنگ آپریشن ممبئی کے ایک شہری محمد خان نے کیا تھا۔ پولیس کی بدعنوانی کو بے نقاب کرنےکے لیے محمد خان نے سٹنگ آپریشن کیا۔

انہوں نے بتایا کہ نہرو نگر پولیس سٹیشن کے کئی پولیس اہلکار ان کے ایک دوست سے ایک عمارت کی تعمیر نو کے لیے پیسے مانگ رہے تھے۔

کچھ دن پہلے ہی انتظامیہ نے اس علاقے ’باپا رفيوجي کیمپ‘ میں تعمیر نو پر پابندی لگا دی تھی۔

محمد خان نے ان کے گھر میں کیمرہ نصب کر دیا تھا جس میں کئی پولیس اہلکار مبینہ طور پر پیسے لیتے ہوئے ریکارڈ ہوگئے۔

ان کا الزام ہے کہ کئی پولیس اہلکاروں کو کل پینتالیس ہزار روپے دیےگئے۔ انہوں نے سینیئر پولیس افسران کو اس ویڈیو کی سی ڈی کے ساتھ شکایت کی تھی۔

انتظامیہ نے اس فوٹیج کوحاصل کرنے کے بعد تحقیقات کا حکم دیا تھا۔ تحقیقاتی رپورٹ میں پولیس والوں کے خلاف کاروائی کا مشورہ دیا گیا تھا جس کے سبب 36 پولیس اہلکاروں کو معطل کر دیا گیا۔

معطل شدہ پولیس والوں کے خلاف اینٹی کرپشن برانچ نے تفتیش شروع کر دی ہے۔ ریاست کے نائب وزیر اعلی آر آر پاٹل کے دفتر سے جاری ہونے والے بیان میں دعوی کیا گیا ہے کہ بدعنوانی کے خلاف مہم پورے مہاراشٹر میں جاری ہے۔

یہ مہم گزشتہ ہفتے ممبئی میں ایک اونچی مگر غیر قانونی عمارت کے گر جانے کے بعد شروع ہوئی ہے۔ اس حادثے میں 74 افراد کی موت ہوگئی تھی۔

اسی بارے میں