دہلی: تہاڑ جیل میں حملہ، قیدی ہلاک

تہاڑ جیل
Image caption تہاڑ جیل میں بھی کئی پاکستانی شہری قید ہیں

بھارت کے دارالحکومت دہلی کی معروف تہاڑ جیل میں قیدیوں پر حملے کے واقعات میں جاوید نامی قیدی ہلاک ہوگئے ہیں۔

یہ حملے جمعہ کو رونما ہوئے تھے جس میں زخمی ہونے والے بعض قیدیوں کا ہسپتال میں اب بھی علاج جاری ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ جیل میں قیدیوں کے دو گروپوں کے درمیان جھڑپ ہوئی تھی تاہم دہلی میں پاکستان کے ہائی کمیشن کے حکام کا کہنا ہے تہاڑ جیل میں بھی پاکستانی قیدی سمجھ کر حملہ کیا گيا۔

بی بی سی سے بات چيت میں پاکستانی ہائی کمیشن کے حکام نے بتایا کہ اس حملے کی عالمی اداروں کی جانب سے تفتیش ہونی چاہیے کہ تہاڑ جیل میں یہ حملے کیوں ہوئے اور اس کا مقصد کیا تھا۔

حکام کے مطابق بھارتی حکومت نے موجودہ تناظر میں جیلوں میں حفاظتی اقدامات بڑھانے کا اعلان کیا ہے۔

ابھی یہ بات اوضح نہیں ہے کہ جو زخمی قیدی ہسپتال میں ہیں ان کا تعلق کہاں سے ہے۔ پولیس نے اس بارے میں کوئی معلومات فراہم نہیں کیں۔

خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی نے جیل کے ایک افسر سنیل گپتا کے حوالے سے کہا ہے کہ جمعے کی صبح کسی بات کو لے کر قیدیوں میں جھڑپ ہوئی اور دیکھتے ہی دیکھتے تنازع تشدد اختیار کر گيا۔

اس واقعے میں ہلاک ہونے والے قیدی کا نام جاوید ہے جن کی عمر 27 سال بتائی جا رہی ہے۔ جاوید کا تعلق دہلی سے تھا اور وہ گزشتہ سات سالوں سے جیل میں تھے۔

سنیل گپتا کے مطابق زخمی قیدیوں کو دین دیال اپادھیائے ہسپتال میں داخل کروایا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ معاملے کی تفصیلی تفتیش کے احکامات دے دیےگئے ہیں۔

واضح رہے کہ سربجیت سنگھ کی موت کے بعد تہاڑ جیل میں حفاظتی اقدامات سخت کر دیے گئے ہیں۔

جمعہ کو جموں کی ہائی سیکورٹی والی کوٹ بھلول جیل میں ایک قیدی نے پاکستانی قیدی پر حملہ کیا تھا جن کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔

اسی بارے میں