ممبئی: ’شوہر‘ سے سکائپ چیٹ کے دوران خودکشی

بھارت کے شہر ممبئی کے کال سینٹر میں کام کرنے والی پچیس سال کی ایک لڑکی نے اپنے ’شوہر‘ سے سکائپ پر لائیو چیٹ کے دوران خود کشی کر لی جبکہ وہ لاچاری سے اپنے گھر پر بیٹھا اپنی ’بیوی‘ کو دم توڑتے دیکھتا رہا۔

یہ واقعہ بدھ کو جوہو کے ایک مزدور طبقے کی کالونی میں پیش آیا۔ اس وقت لڑکی شوبھنا منہر سرتي گھر پر اکیلی تھیں۔ اس کے والدین سورت گئے ہوئے تھے جبکہ چھوٹی بہن گھر سے باہر تھی۔

اطلاعات کے مطابق لڑکے نے لڑکی کی بہن کو فون کیا لیکن جب تک بہن گھر پہنچی تو بہت دیر ہو چکی تھی۔

پولیس نے لڑکے کے ماں باپ کو گرفتار کا لیا ہے جبکہ لڑکے کی تلاش جاری ہے۔

لائیو چیٹ کے دوران لڑکی نے اپنے گلے میں پھانسی کیوں لگائی یہ ’شوہر‘ سوپنل سروے کے بیان کے بعد ہی معلوم ہوسکے گا۔

بتایا جاتا ہے کہ دونوں کے درمیان تعلقات آٹھ سال پرانے تھے۔

رپورٹ کے مطابق لڑکے کے خاندان والے شادی کے لیے پہلے راضی نہیں تھے اور اس کی شادی کسی اور لڑکی سے کروانا چاہتے تھے۔ لیکن دونوں نے اپنے خاندان کو بتائے بغیر گزشتہ سال کورٹ میں شادی کر لی تھی۔

لڑکی کے خاندان نے بی بی سی کو شادی کے دستاویز دکھائے۔ شوبھنا کے خاندان والوں نے لڑکے والوں پر جہیز کی مانگ کا الزام لگایا۔

Image caption لڑکی کے خاندان نے بی بی سی کو شادی کے دستاویز دکھائے

شوبھنا کے والد منہر سرتي نے کہا ’انہوں نے ہم سے کہا ہمیں 25 لاکھ روپے دے دو تو ہم کل یہ شادی کرا دیں گے۔‘

منہر سرتي نے جب اتنے پیسے نہ دینے پر اپنی مجبوری ظاہر کی تو لڑکے والوں نے شادی سے انکار کر دیا۔

منہر سرتی کہتے ہیں ’وہ اٹھ کر چلے آئے اور ہم بھی اٹھ کر چلے آئے۔‘

اس کے بعد لڑکی اور لڑکے میں ملنا جلنا بند ہو گیا۔ لیکن وہ اپنے گھر والوں سے چھپ کر ملتے رہے اور گزشتہ سال کورٹ میں شادی بھی کر لی۔

شوبھنا کے خاندان کو اس بات کا علم اس خود کشی کے بعد ہوا۔ سرتی نے کہا ’ہمیں بعد میں پتہ چلا دونوں نے گزشتہ سال شادی کر لی تھی۔‘

پولیس کے مطابق سوپنل نے شادی کے بعد شوبھنا کو بار بار یقین دہانی کرائی کہ وہ اسے اپنے گھر جلد بلائےگا اور اپنے شادی کے بارے میں اپنے خاندان کو بتائے گا۔

لیکن حال میں لڑکے نے جب یہ کہا کہ اس کے خاندان والے اس کی شادی کسی اور لڑکی سے کرنا چاہتے ہیں تو لڑکی مایوس ہو گئی اور ان کے درمیان کافی بحث ہونے لگی۔

شوبھنا کے رشتہ دار لڑکے کے خلاف استحصال کا الزام لگاتے ہیں۔ لڑکی کے چچا کہتے ہیں سوپنل کا ارادہ شادی کرنے کا تھا ہی نہیں۔

پولیس نے لڑکے اور اس کے والدین کے خلاف خودکشی کے لیے اکسانے اور جہیز کے مطالبہ سمیت کئی اور مقدمہ درج کیا ہے۔

اسی بارے میں