مودی ملے پر اڈوانی نے دیکھا تک نہیں

Image caption جب مودی اڈوانی کے پاؤں چھونے کے لئے جھکے تو انہوں نے مودی کی طرف دیکھے بغیر ہی اپنے ہاتھ جوڑ لیے

بھارتیہ جنتا پارٹی کے سینیئر رہنما لال کرشن اڈوانی اور وزیر اعظم کے عہدے کے امیدوار نریندر مودی نے مودی کو وزارتِ عظمیٰ کا امیدوار کا اعلان کیے جانے کے بعد بھوپال میں پہلی بار ان کے ساتھ اکٹھے ایک تقریب میں شرکت کی۔

دونوں رہنما ملے ضرور لیکن اس ملاقات میں گرمجوشی نظر نہیں آئی۔ نریندر مودی نے جھک کر لال کرشن اڈوانی کے پاؤں بھی چھوئے۔ وہیں اڈوانی نے مدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ شیو راج سنگھ چوہان اور گجرات کے وزیر اعلیٰ نریندر مودی کو گلدستے پیش کیے۔

جب مودی اڈوانی کے پاؤں چھونے کے لیے جھکے تو انہوں نے مودی کی طرف دیکھے بغیر ہی اپنے ہاتھ جوڑ لیے۔

نریندر مودی آج کل سیاسی جلسوں سے خطاب کرنے میں مصروف ہیں۔

پارٹی کارکنوں کے اجتماع میں اڈوانی نے کہا کہ ’آج بی جے پی کو جو مقام حاصل ہوا ہے وہ جذباتی تقریروں کی وجہ سے نہیں بلکہ پارٹی کے کارکنوں کی محنت اور لگن کی وجہ سے ملا ہے۔ ہم صرف تقریروں کے دم پر الیکشن نہیں جیت سکتے بلکہ جیت کام کے دم پر ہی ملے گی۔‘

اڈوانی نے اپنے خطاب میں این ڈی اے کی حکومت، چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ رمن سنگھ، مدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ اور گجرات کے وزیر اعلیٰ نریندر مودی کی تعریف بھی کی۔

انہوں نے اپنی تقریر میں مودی کو وزارتِ عظمیٰ کا امیدوار بنائے جانے کا خصوصی ذکر بھی کیا۔ انہوں نے کہا کہ مودی کی شکل میں ملک کو ایک اچھا رہنما ملے گا۔

نریندر مودی نے اپنے خطاب میں کانگریس کو نشانہ بنایا۔انہوں نے کہا کہ آئندہ انتخابات کے بعد بی جے پی ہی مرکز میں حکومت بنائے گی۔

مودی نے کانگریس پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ’دوسرے انتخابات کانگریس نہیں لڑے گی بلکہ سی بی آئی لڑے گی۔ کانگریس میں اب بی جے پی سے مقابلہ کرنے کا دم نہیں ہے‘

پارٹی کے صدر راج ناتھ سنگھ نے بھی اگلے عام انتخابات میں مرکز میں حکومت بنانے کا دعویٰ کیا۔ راج ناتھ نے کہا کہ 2014 میں مودی کو وزیرِ اعظم بننے سے کوئی نہیں روک سکتا۔

اسی بارے میں