ہیلپ اور عمومی سوالات

ہیلپ اور عمومی سوالات

موضوعات:

اس ویب سائٹ کو دیکھنے کا بہترین طریقہ کیا ہے؟

جی ایم ٹی کا مطلب کیا ہے؟

ویڈیوز کیسے دیکھی جا سکتی ہیں اور آڈیوز سننے کا طریقہ کیا ہے؟

پورٹیبل ورژن کیا ہے؟

موبائل ورژن کیا ہے؟

ادارتی مسائل کے بارے میں عمومی سوالات

تکنیکی مسائل سے متعلق عمومی سوالات

موضوعات

سِنڈیکیشن (آر ایس ایس اور ATOM فیڈز)

شارٹ ویوز پر ریڈیو سننا

سِنڈیکیشن

فیڈ بیک کے لیے فارم

پوڈکاسٹ

تلاش یا سرچ

میں آپ کو تصاویر، آڈیوز اور ویڈیوز کیسے بھیجوں؟

اس ویب سائیٹ کو دیکھنے کا بہترین طرقہ کیا ہے؟

یہ ویب سائیٹ 1024 پِکسلز کی چوڑائی کو مدنظر رکھ کر بنائی گئی ہے۔ اگر آپ اس سے کم ریزولیوشن کی سکرین استعمال کر رہے ہیں، تو آپ کو اس ویب سائٹ پر موجود تمام اشیاء دیکھنے کے لیے اُوپر سے نیچے سکرول کرنا پڑے گا۔ دوسرا طریقہ یہ بھی ہو سکتا ہے کہ آپ اس ویب سائٹ کا کم گرافکس والا ورژن (low-graphic version) استعمال کریں۔

اس ویب سائیٹ کے کچھ فیچرز ایسے ہیں جو یہ سوچ کر بنائے گئے ہیں کہ آپ کے کمپیوٹر پر جاوا سکرپٹ کی آپشن آن یا انیببلڈ ہے۔

جاوا سکرپٹ کو انیبلڈ کرنے کے لئیے آپ مندرجہ عمل کر سکتے ہیں:

انٹرنیٹ ایکسپلورر فار وِنڈوز (Internet Explorer for Windows) کی صورت میں:

انٹرنیٹ آپشنز میں جا کر ٹولز مینیو میں جائیے، سکیورٹی والے ٹیب پر کلک کیجیے، انٹرنیٹ زون کو ہائی لائٹ کیجیے اور سکیورٹی آپشنز کھولنے کے لیے کسٹم لیول کے بٹن پر کلک کیجیے۔ فہرست کے آخر میں سکرپٹنگ کی آپشن پر جائیے اور اسے این ایبل کر دیجیے۔ او کے کا بٹن دبا کر پینلز کو بند کر دیجیے۔ اب دوبارہ اس صفحہ کو ری لوڈ کیجیے جو جاوا سکرپٹ سے چلتا ہے۔

انٹرنیٹ ایکسپلورر فار میک (Internet Explorer for Mac):

ایکسپلورر کے مینیو میں جائیں اور پروفائل کی آپشن کو تلاش کیجیے۔ ونڈو کی بائیں جانب دی ہوئی فہرست میں سے سلیکٹ کانٹینٹ کی آپشن کو سلیکٹ کیجیے۔ ایکٹِو کانٹینٹ کے سیکشن میں جائیے۔ ایبل سکرپٹنگ کی آپشن کے سامنے کلک کیجئیے۔ اب اس وِنڈو کو بند کر کے ویب سائٹ کے مذکورہ صفحہ کو ری فریش کیجیے، اور ویب کانٹینٹ میں موجود جاوا لِنک کو این ایبل کیجیے۔

سفاری (Safari): مینیو میں جا کر پریفرینسِز میں جائیے، سکیورٹی پر کِلک کیجیے۔ یہاں پر موجود جاوا سکرپٹ کی آپشن کو چیک یا آن کر دی کیجیے۔

فائر فاکس (Firefox): ٹُولز کے مینیو میں جا کر آپشنز کو سلیکٹ کیجئیے۔ اس کے بعد ویب فیچرز پر کلک کیجیے، جاوا این ایبل کرنے کے بعد اوکے کر دیجیے۔

اُوپرا (Opera):

ٹولز میں جا کر کوئک پریفرینسز میں جائیے اور اینیبل جاوا سکپرٹ پر کِلک کر دیجئیے۔

ویڈیوز دیکھنے اور آڈیوز سننے کا طریقہ کیا ہے؟

بی بی سی اردو ڈاٹ کام کی ویڈیوز اور آڈیوز ہماری ویب سائٹ پر مختلف جگہوں پر موجود ہوتی ہیں، کبھی ویڈیو یا آڈیو کے طور پر اور کبھی مختلف خبروں کے اندر۔ ہمارے آڈیو یا ویڈیو کلپ دیکھنے اور سننے کے لیے آپ کے پاس کم از کمkbps 56 کا انٹرنیٹ کنکشن ہونا ضروری ہے، تاہم بہترین نتائج تیز رفتار براڈ بینڈ کنکشن کی صورت میں ہی حاصل کیے جا سکتے ہیں۔

مختلف خبروں کے اندر دیے ہوئے آڈیو/ویڈیو کلپس کو کھولنے کے لیے، آپ کو فلیش پلیئر پلگ اِن کی ضرورت ہو گی۔

فلیش پلیئر ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئیے یہاں کلک کیجئیے۔

http://www.bbc.co.uk/website/categories/plug/flash/flash.shtml?intro2

بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر موجود دیگر آڈیوز اور ویڈیوز سننے اور دیکھنے کے لئیے آپ کو ریئل پلیئر یا وِنڈوز میڈیا پلیئر درکار ہو گا۔

رئیل پلیئر ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کیجیے۔

http://www.bbc.co.uk/website/categories/plug/real/newreal.shtml?intro2

ونڈوز میڈیا پلیئر ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کیجیے۔

http://www.bbc.co.uk/website/categories/plug/winmedia/newwinmedia.shtml?intro2

یاد رکھیے کہ بی بی سی کی ویب سائٹ پر موجود ویڈیوز اور آڈیوز وغیرہ کے لیے درکار تمام پلگ اِنز مفت فراہم کیے جاتے ہیں، اس لیے آپ کو کبھی بھی اپنے کریڈٹ کارڈ وغیرہ کی تفصیل نہیں دینا ہو گی۔ آپ جب یہ پلگ اِنز ڈاؤن لوڈ کریں گے تو آپ سے پوچھا جائے گا کہ آپ مذکورہ کمپنی کی شرائط استعمال وغیرہ سے متفق ہیں یا نہیں، تاہم بی بی سی کا اس سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ مذکورہ کمپنی کو چاہیے کہ وہ آپ کو یہ بھی بتائے کہ وہ آپ کے ذاتی کوائف وغیرہ کو کیونکر استعمال کرے گی۔

موبائل اور پورٹیبل ورژنز (Mobile and Portable Versions ):

آپ انٹرنیٹ کو استعمال کرتے ہوئے اپنے موبائل فون پر بھی بی بی سی اردو ڈاٹ کام سے لطف اندوز ہو سکتے ہیں۔ اس کے لیے ہم نے خاص طور پر ویپ یا WAP کی سہولت دی ہوئی ہے۔ علاوہ ازیں ہم آپ کو ایک جاوا سافٹ ویئر ایپلیکیشن کی سہولت بھی فراہم کرتے ہیں۔ آپ یہ جاوا ایپلیکیشن اپنے موبائل فون پر ڈاؤن لوڈ اور اِنسٹال کر سکتے ہیں اور اپنے موبائل فون پر ہماری شہ سرخیوں سے جب چاہیں باخبر رہ سکتے ہیں۔

پوڈکاسٹ (podcast):

آپ چلتے پھرتے بھی بی بی سی آڈیوز سے لطف اندوز ہو سکتے ہیں۔ ہماری پوڈکاسٹ سروس سے فائدہ اٹھانے کی لیے آپ ضروری سافٹ ویئر یہاں سے ڈاؤن لوڈ کر سکتے ہیں۔ مزید معلومات کے لیے یہاں کلک کیجیے۔

Podcasts

موضوعات اور خبروں کی تلاش:

آپ بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر موجود خبروں کے متن، آڈیوز اور ویڈیوز تک رسائی مختلف طریقوں سے حاصل کر سکتے ہیں۔ صفحہ اول اور ہمارے دوسرے انڈیکس میں آپ وہ تازہ ترین خبریں وغیرہ دیکھ سکتے ہیں جو ہماری ادارتی ٹیم نے آپ کے لیے تیار کی ہیں۔ اس کے علاوہ ہمارے ہاں انواع و اقسام کی خبریں اور دوسری کہانیاں مختلف موضوعات کےتحت بھی دیکھی جا سکتی ہیں۔ اگر آپ کسی خاص خبر کی تلاش میں ہیں تو آپ ہماری 'تلاش' کی سہولت استعمال کر سکتے ہیں۔: ( Link for search)

سوشل بُک مارکنگ لنک (Social Book-marking link) :

اب بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر آپ کو کئی ایک سوشل بُک مارکنگ یا شیئرنگ والی ویب سائیٹس کے ایڈریس اور لِنک بھی ستیاب ہوں گے۔ اس قسم کے لنکس ہماری ہر خبر اور آڈیو / ویڈیو والے صفحے پر دیکھے جا سکتے ہیں۔

سوشل بُک مارکنگ یا شئرنگ والی ویب سائٹس آپ کو یہ سہولت دیتی ہیں کہ آپ اپنی پسند کی خبروں وغیرہ کو انٹرنیٹ پر محفوظ، ٹیگ اور شئر کر سکتے ہیں۔ یوں یہ خبریں آپ نہ صرف اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کر سکتے ہیں بلکہ جب چاہیں کسی بھی کمپیوٹر سے اپنی محفوظ شدہ خبروں تک رسائی حاصل کر سکتے ہیں۔ مثال کے طور پر ہو سکتا ہے کہ آپ بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر کوئی اسی خبر دیکھیں جو آپ چاہتے ہیں کہ آپ اپنے آئندہ استعمال کے لئیے محفوظ کر لیں یا اپنے کسی دوست کے ساتھ شیئر کریں، تو آپ ایسا بُک مارکنگ سے کر سکتے ہیں۔

سوشل بُک مارکنگ کی سہولت فراہم کرنے والی یہ تمام ویب سائیٹس یہ سروس مفت فراہم کرتی ہیں، تاہم ہر کسی کے طریقہ کار میں فرق ہو سکتا ہے۔ اس بارے میں مذید معلومات وِکی پیڈیا سے حاصل کی جا سکتی ہیں۔ پتہ ہے : http://en.wikipedia.org/wiki/social_bookmarking

آر ایس ایس اور ایٹم (RSS and ATOM)

آر ایس ایس کی سہولت سے آپ کو معلوم ہو جاتا ہے کہ ویب سائیٹ پر کب کسی نئی خبر کا اضافہ ہوا ہے، یا اسے اپ ڈیٹ کیا گیا ہے۔ اس سہولت کا فائدہ یہ ہے کہ ہم جوں ہی کوئی خبر شائع کرتے ہیں آپ کو ہماری ویب سائٹ پر آئے بغیر معلوم ہو جاتا ہے کہ ویب سائیٹ کیا نئی خبر یا ویڈیو/آڈیو آ گئی ہے۔

اس بات پر بحث ہوتی رہتی ہے کہ آخر آر ایس ایس سے مراد کیا، تاہم زیادہ تر لوگوں کا خیال ہے کہ اس سے مراد ’ریئل سپمل سِنڈیکیشن‘ ہے۔ مختصر یہ کہ آر ایس ایس ایک ایسا طریقہ ہے کہ جس میں آپ کی بجائے آپ کا کمپیوٹر ویب سائٹ کو پڑھتا ہے۔

آر ایس ایس کے بارے میں مزید جاننے اور یہ معلوم کرنے کے لیے کہ اسے کیسے استعمال کیا جاتا ہے آپ یہاں کلک کر سکتے ہیں [URL for ‘what is RSS?' feeds]

سِنڈیکیشن - مزید معلومات

ادارتی حوالے سے عمومی سوالوں کے جواب:

میں آپ کو تصاویر، آڈیوز اور ویڈیوز کیسے بھجوا سکتا ہوں؟

دیگر سہولیات (Accessibility):

ایسے افراد کے لیے کہ جو کسی معذوری کا شکار ہیں، انٹرنیٹ ایک بہت بڑی سہولت ثابت ہو سکتا ہے اور یہ انہیں معاشرے اور خود بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر بھرپور طریقے سے حصہ لینے کی سہولت فراہم کرتا ہے۔ ہماری پوری کوشش ہے کہ ہم بی بی سی اردو ڈاٹ کو ایسے تمام افراد کے لیے زیادہ سے زیادہ موزوں بنائیں۔ اس سلسلے میں ہم جو سہولتیں فراہم کرتے ہیں ان کی تفصیل کچھ یوں ہے۔

سیمینٹک مارک اپ (Semantic Mark up) : سنہ دو ہزار آٹھ کے آخر سے ہم نے اپنے صفحات کو بین الاقوامی معیار کے مطابق ترتیب دینا شروع کر دیا ہے، تاکہ خاص سیاق و سباق کے حوالے سے ہماری خبروں تک رسائی سرچ انجنز کے ذریعے بھی ممکن ہو سکے۔

- آر ایس ایس اور ایٹم فیڈز(RSS and ATOM Feeds): ہم نے آپ کے لیے بی بی سی اردو ڈاٹ کام کے صفحہ اول اور ہمارے دیگر موضوعات کے حوالے سے آر ایس ایس فیڈ اور ایٹم فیڈ کا بندوبست بھی کر دیا ہے۔

- لوگرافکس ورژن (Low Graphics Version): یہ سہولت فراہم کرنے کا مقصد یہ ہے کہ ہمارے وہ تمام قارئین جو کسی تکنیکی مجبوری( مثلاً اچھے براڈ بینڈ کا میسر نہ ہونا) کے باعت ہماری معمول کی ویب سائٹ تک رسائی حاصل نہیں کر سکتے، وہ بھی ہماری خبروں سے محروم نہ رہیں۔

- ویب سائٹ کا رنگ اور پس منظر تبدیل کرنے کی سہولت

- بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر شائع ہونے والے مواد کا سائز بڑا کرنے کی سہولت۔ ( اپنے انٹرنیٹ براؤزر کی ’ویو‘) کی آپشن میں جا کر آپ ’زوم‘ یا ’ٹیکسٹ سائز‘ کے ذریعے ہماری خبروں کے متن کا سائز بڑھا سکتے ہیں۔)

- بی بی سی اردو ڈاٹ کی فراہم کردہ سہولیات کے بارے میں مزید معلومات کے لیے بی بی سی کی انگریزی ویب سائٹ پر موجود ’مائی ویب‘ کی آپشن پر جایئے۔

- http://www.bbc.co.uk/accessibility

جی ایم ٹی کیا ہے؟

زمین پر کھینچی ہوئی تصوراتی لکیر سے زیرو ڈگری کے فاصلے پر پائے جانے وقت کو دنیا کا معیاری وقت یا گرینچ مِین ٹائم کہا جاتا ہے۔ یہ لکیر قطب شمالی کو قطب جنوبی سے ملاتی ہے اور لندن کے مضافات میں واقع گرینچ کے مقام سے گزرتی ہے۔ دنیا کے مختلف ممالک اور شہروں کے اوقات کا تعین ان مقامات کے گرینچ سے گزرنے والی لکیر (گرینچ میریڈین) سے قربت یا دوری کی بنیاد پر کیا جاتا ہے۔ اس کا عمومی اصول یہ ہے کہ اگر آپ گرینچ میریڈین سے مشرق میں ہیں تو آپ کا وقت جی ایم ٹی سے آگے ہوگا۔ (مثلاً چین کا معیاری وقت جی ایم ٹی جمع آٹھ گھنٹے ہے)۔

اسی طری گرینچ میریڈین سے مغرب میں پائے جانے والے مقامات کے مقامی اوقات گرینچ کے معیاری وقت سے پیچھے ہوتے ہیں۔ (مثلاً نیویارک کا معیاری وقت جی ایم ٹی منفی پانچ گھنٹے ہوتا ہے۔)

بی بی سی کا معیاری وقت اور جی ایم ٹی:

بی بی سی عالمی سروس پر عموما جی ایم ٹی کو ہی معیاری وقت کہا جاتا ہے، تاہم بی بی سی کی مختلف زبانوں کی ویب سائٹس پر دیگر ممالک کے معیاری اوقات بھی دکھائے جاتے ہیں۔

موسم کے لحاظ سے تبدیلیاں:

گرینچ کا معیاری وقت سال بھر تبدیل نہیں ہوتا، اس لیے موسم سرما میں برطانیہ کے معیاری وقت اور گرینچ مِین ٹائم میں کوئی فرق نہیں ہوتا۔ تاہم مارچ میں برطانیہ میں گھڑیاں ایک گھنٹہ آگے کر دی جاتی ہیں اس لیے گرمیوں میں برطانیہ کا مقامی وقت گرینچ سے ایک گھنٹہ آگے ہوتا ہے۔ دنیا کے کئی دیگر ممالک بھی طلوع آفتاب کے بدلتے اوقات کے مطابق اپنا مقامی وقت آگے پیچھے کرتے ہیں۔

یو ٹی سی:

چند عالمی میڈیا ادارے اپنے نشریات میں گرینچ کے معیاری وقت کی بجائے یو ٹی سی یا کوآرڈینیٹڈ یونیورسل ٹائم کی اصطلاح استعمال کرتے ہیں۔ عملاً ان دونوں اوقات میں کوئی فرق نہیں۔

میں بی بی سی اردو کیسے سُن سکتا ہوں؟

اب کئی ممالک میں بی بی سی کی عالمی سروس کے پروگرام ایف ایم اور اے ایم پر سنے جا سکتے ہیں، تاہم دنیا کے بیشتر علاقوں میں ہماری نشریات شارٹ ویوو ریڈیو پر ہی سنی جاتی ہیں۔