سندھ، بلوچستان میں سیلاب پر سوال و جواب

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 27 ستمبر 2012 ,‭ 15:43 GMT 20:43 PST

پاکستان کے جنوبی صوبہ سندھ اور بلوچستان کو مسلسل تیسرے برس بارشوں اور سیلاب کی وجہ سے بڑے پیمانے پر نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

قدرتی آفات سے نمٹنے والے ادارے این ڈی ایم اے کے اعدادوشمار کے مطابق تمام ملک میں چوالیس لاکھ سے زائد افراد متاثر ہوئے، تین سو بہتر جانوں سےگئے اور مال مویشیوں اور جائیدادوں کو الگ نقصان پہنچا ہے۔

میڈیا اور امدادی تنظیموں نے بھی اس مرتبہ اس آفت کو وہ توجہ نہیں دی جو اس سے قبل دو برسوں تک ملتی رہی۔

بی بی سی اردو کے نامہ نگار اعجاز مہر نےگذشتہ ایک ہفتہ سندھ اور بلوچستان کے مختلف متاثرہ علاقوں کا دورہ کرکے رپورٹنگ کی ہے۔

وہ اس وقت بھی انہیں علاقوں میں ہیں اور اگر آپ ان سے کوئی سوال پوچھنا چاہیں تو اس کے لیے ہمارے فیس بک کے صفحے پر اپنے سوال کلِک اس لنک پر جا کر لکھیں۔

آپ کے سوالات کے جوابات وقت کے ساتھ ساتھ آپ کے نام کو ٹیگ کر کے فیس بک پر آپ کے سوالات والے صفحے پر ہی لکھے جائیں گے۔

سوالات مختصر اور واضح لکھیں اور اردو، انگریزی یا رومن میں لکھے گئے سوالات قابل قبول ہوں گے۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔