ٹاکنگ پوائنٹ

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 8 نومبر 2012 ,‭ 18:15 GMT 23:15 PST

اسد درانی اتوار گیارہ نومبر کو بی بی سی کے پروگرام سیربین میں آپ کے سوالوں کے جواب دیں گے

پاکستان کی سپریم کورٹ نے سنہ انیس سو نوے کے انتخابات میں سیاست دانوں میں رقوم کی تقسیم کے معاملے سے متعلق ایئرمارشل ریٹائرڈ اصغر خان کے مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے کہا ہے کہ خفیہ اداروں اور فوج کا کوئی کردار نہیں ہے۔

عدالت نے گزشتہ ماہ سنائے جانے والے فیصلے میں رقوم کی تقسیم کے اس ناپسندیدہ فعل کا ذمہ دار پاکستانی فوج کے سابق سربراہ جنرل ریٹائرڈ اسلم بیگ اور انٹر سروسز انٹیلیجنس کے اس وقت کے ڈائریکٹر جنرل لیفٹینٹ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی کو قرار دیا۔

جنرل اسد درانی اس مقدمے کی کئی ماہ جاری رہنے والی کارروائی میں یہ تسلیم کر چکے ہیں کہ انہوں نے سیاستدانوں میں رقوم بانٹیں۔

گو کہ رقوم کی تقسیم کا واقعہ دو دہائیوں سے بھی زیادہ پرانا ہے لیکن مبصرین کہتے ہیں کہ اس کے اثرات پاکستانی سیاست اور امور مملکت پر آج تک پائے جاتے ہیں۔

یہ رقم کیوں تقسیم ہوئی اور کن مقاصد کے لیے استعمال کی گئی؟ اس بارے میں مختلف لوگ مختلف مؤقف اور تاویلیں پیش کرتے نظر آتے ہیں۔

بی بی سی نے اپنے سامعین اور قارئین کے لیے اس سارے معاملے کو سمجھنے میں مدد دینے کے لیے ایک خصوصی ’ٹالکنگ پوائنٹ‘ کا اہتمام کیا ہے۔

اس سارے قصے کے مرکزی کردار لیفٹینٹ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی اتوار گیارہ نومبر کو بی بی سی کے پروگرام سیربین میں آپ کے سوالوں کے جواب دیں گے۔

آپ بھی ان سے کوئی سوال پوچھنا چاہیں تو نیچے دیےگئے نمبروں پر فون کر کے اپنا نام، ٹیلی فون نمبر اور مختصر سوال ریکارڈ کروا دیں جس کے بعد ہم خود آپ سے رابطہ کریں گے۔

پاکستان کے اندر سے کال کرنے کے لیے ہمارا ٹول فری نمبر 22275 0800

پاکستان کے باہر سے آپ اس نمبر پر فون کر سکتے ہیں: 0092512611139 (یہ نمبر ٹول فری نہیں ہے)

Virtual keyboard

ہم سے رابطہ کریں

* مطلوبہ فیلڈز کی نشاندہی

اگر آپ ای میل کے ذریعے اپنا سوال بھیجنا چاہیں تو ذیل میں دیے گئے آن سکرین کی بورڈ کو استعمال کریں۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔