Got a TV Licence?

You need one to watch live TV on any channel or device, and BBC programmes on iPlayer. It’s the law.

Find out more
I don’t have a TV Licence.

لائیو رپورٹنگ

time_stated_uk

  1. بریکنگسماعت سات نومبر تک ملتوی

    نامہ نگار شہزاد ملک کے مطابق احتساب عدالت نے سماعت کو سات نومبر تک ملتوی کر دیا ہے۔ تاہم نواز شریف کو عدالت سے حاضری کے لیے استثنیٰ نہیں دی گئی۔ نواز شریف کی جانب سے عدالت میں دو الگ الگ ضمانتی مچلکے بھی جمع کروائے گئے۔

  2. نواز، مریم پہلی اور صفدر تیسری صف میں

    عدالت میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق کمرہ عدالت میں نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز کو پہلی صف میں جگہ دی گئی جبکہ ان کے داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو تیسری نشست پر بٹھایا گیا ہے۔

  3. بریکنگاتنی جلدی کیوں ہے؟

    نواز

    نامہ نگار شہزاد ملک نے بتایا کہ میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کے دوران نواز شریف نے اس بات پر حیرت کا اظہار کیا کہ ان کے خلاف کسیز میں سپریم کورٹ نے صرف چھ ماہ کا وقت دیا۔ ’ایک ریفرنس پر ایک ماہ کا وقت بھی نہیں دیا جا رہا۔ نیب میں دیگر زیر سماعت مقدمات میں ایک بھی نگراں جج مقرر نہیں کیا گیا۔ یہ سب سمجھ سے باہر ہے۔‘

  4. ’پریشان نہ ہوں فیصلے کی کاپی منگوا ہی لیتے ہیں‘

    سابق وزیر اعظم کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ جب تک فیصلے کی کاپی نہیں آتی منگل تک سماعت ملتوی کر دیں۔ جس پر جج محمد بشیر نے کہا کہ آپ پریشان نہ ہوں فیصلے کی کاپی منگوا ہی لیتے ہیں۔

  5. ’زرداری صاحب مجھے گالیاں نہیں دے رہے کسی کو خوش کر رہے ہیں‘

    کمرہ عدالت میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا کہ زرداری صاحب مجھے گالیاں نہیں دے رہے کسی کو خوش کر رہے ہیں۔ سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کیا اس بات کی سزا ہے کہ کراچی میں امن لایا، سی پیک بنایا؟

  6. بریکنگ’کیسز کرپشن کے نہیں‘

    نامہ نگار شہزاد ملک کے مطابق میاں نواز شریف نے صحافیوں سے گفتگو میں کہا کہ سپریم کورٹ کے ججز نے کہا کہ کیسز کرپشن کے نہیں۔

  7. ’لوڈشیڈنگ اور دہشت گردی کو ختم کرنے کی سزا دی گئی‘

    میاں نواز شریف نے کمرہ عدالت کے اندر وقفے کے دوران میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انھیں لوڈشیڈنگ اور دہشت گردی کو ختم کرنے کی سزا دی گئی۔

    خیال رہے کہ نواز شریف نے عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

  8. بریکنگہائی کورٹ کے فیصلے کی کاپی موصول نہیں ہوئیئ 15 منٹ کا وقفہ

    نامہ نگار شمائلہ خان کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے گذشتہ روز کیے جانے والے فیصلے کی کاپی احتساب عدالت کو موصول نہیں ہوئی جس کے باعث عدالت نے سماعت میں 15 منٹ کا وقفہ دیا ہے۔

    یاد رہے کہ گذشتہ روز ہائی کورٹ نے ایک فیصلے میں احتساب عدالت کو حکم دیا تھا کہ وہ نواز شریف کی طرف سے ان کے خلاف زیر سماعت تین ریفرنسوں کو یکجا کرنے کی درخواست کو رد کیے جانے کے فیصلے پر نظر ثانی کرے۔

  9. Post update

    اسلام آباد
  10. بریکنگسابق وزیراعظم عدالت میں

    سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز اپنے شوہر کے ہمراہ کمرہ عدالت میں چلے گئے ہیں۔ سابق وزیراعظم نے میڈیا سے کوئی بات نہیں کی۔

  11. Post update

    نواز شریف احتساب عدالت پہنچ گئے ہیں جہاں ان کی گاڑی کو پاکستان مسلم لیگ نواز کے کارکنان نے گھیرے میں لے لیا اور اُس پر پھول نچھاور کیے۔

  12. دروازے بند ہیں

    عدالت

    بی سی کی نامہ نگار شمائلہ خان کے مطابق ابھی تک جوڈیشل کمپلیکس کے دروازوں کو میڈیا اور مسلم لیگ ن کے کارکنوں کے لیے کھولا نہیں گیا اور وہاں سکیورٹی کے سخت انتظامات ہیں۔

  13. نواز شریف احتساب عدالت میں تیسری پیشی کے لیے روانہ

    سابق وزیراعظم نواز شریف پنجاب ہاؤس اسلام آباد سے احتساب عدالت کی جانب روانہ ہو گئے ہیں۔ یہ تیسرا موقع ہے جب وہ احتساب عدالت کے لیے پیش ہو رہے ہیں۔

  14. سابق وزیر اعظم کے ہمراہ بیٹی اور داماد

    نواز شریف اپنی بیٹی اور داماد کیپٹین صفدر کے ہمراہ کچھ دیر میں احتساب عدالت میں روانہ ہونے والے ہیں۔ ان کی رواگنی سے قبل پنجاب ہاؤس کے باہر سخت سیکورٹی کے انتظامات کیے گئے ہیں۔ پنجاب ہاؤس کے باہر پاکستان مسلم لیگ کے کارکنان بھی موجود ہیں۔

  15. پنجاب ہاؤس سے احتساب عدالت کے لیے روانگی جلد

    پاکستان کے سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف اپنی بیٹی مریم نواز کے ہمراہ احتساب عدالت میں پیشی کے لیے پنجاب ہاؤس سے روانہ ہونے والے ہیں۔ اس سے قبل نواز شریف تین ہفتے تک برطانیہ میں اپنی علیل اہلیہ کلثوم نواز کے ہمراہ تھے۔

    پروٹوکول
  16. ’کوئی نئی بات نہیں ہے‘

    وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب احتساب عدالت پہنچ گئی ہیں۔ وہاں انھوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کوئی نئی بات نہیں ہے کہ نواز شریف عدالت جا رہے ہیں وہ اس سے پہلے سپریم کورٹ بھی گئے تھے۔ انھوں نے عوام کو بہت سے تحائف دیے ہیں اور وہ پاکستان کے لیڈر ہیں، ملک سے کیوں بھاگیں گے۔

  17. ’میرے اردگرد لوگ کہتے ہیں مجھے ایک خاص کردار ادا کرنا ہے‘

    مریم

    سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے کہا ہے کہ 'میرے اردگرد لوگ مجھے بتاتے ہیں کہ مجھے ایک کردار ادا کرنا ہے۔‘

    امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کے مطابق مریم نواز کا کہنا ہے کہ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا آپ خود کو مستقبل میں وزیراعظم کے طور پر دیکھنا چاہیں گی جس پر انھوں نے کہا کہ 'میرے اردگرد لوگ مجھے بتاتے ہیں کہ مجھے ایک خاص کردار ادا کرنا ہے۔'

    ان کا کہنا تھا کہ 'میں نہیں جانتی کہ کل کیا ہوگا لیکن میرے خیال میں مجھ پر لوگوں کا قرض ہے، مجھے ان میں جانے کی ضرورت ہے۔'

    شریف خاندان میں سیاسی اختلافات کے حوالے سے مریم نواز کا کہنا تھا کہ 'یہ ایک منقسم گھر نہیں ہے' اور ان کا خاندان خاندانی اقدار پر فخر محسوس کرتا ہے۔

  18. ’12 نومبر کے آس پاس‘

    مشاہداللہ خان نے بی بی سی کو بتایا کہ '12 نومبر کے آس پاس نواز شریف ایبٹ آباد میں جلسہ کریں گے جس کا مطلب انتخابی مہم بھی لیا جا سکتا ہے اور سیاسی جواب کے طور پر بھی۔ مقام کا انتخاب بھی اس لیے سوچ کر کیا گیا ہے کہ پنجاب کے بعد صوبہ خیبر پختونخوا میں بھی دکھایا جایے کہ عوام نے نا اہلی کا فیصلہ نہیں مانا۔'

  19. ریفرنس یکجا کرنے کے فیصلے پر نظرثانی کا حکم

    اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی طرف سے ان کے خلاف دائر ہونے والے تینوں ریفرنس کو یکجا کرنے کے بارے میں احتساب عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا ہے۔

    اسلام آباد سے نامہ نگار شہزاد ملک نے بتایا کہ عدالت نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ احتساب عدالت نے 19 اکتوبر کو ان ریفرنس کو یکجا کرنے کے بارے میں جو درخواستوں کو مسترد کیا تھا اس بارے میں نظرثانی کرے۔

    جسٹس عامر فاروق کی سربراہی میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ نے سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی طرف سے دائر کی جانے والی درخواست کی سماعت کی۔