Got a TV Licence?

You need one to watch live TV on any channel or device, and BBC programmes on iPlayer. It’s the law.

Find out more
I don’t have a TV Licence.

لائیو رپورٹنگ

time_stated_uk

  1. Post update

    امریکہ کے صدارتی انتخاب پر بی بی سی اردو کی لائیو کوریج اپنے اختتام کو پہنچی۔ اب یہ صفحہ اپ ڈیٹ نہیں کیا جا رہا اور مزید معلومات کے لیے بی بی سی اردو کے خصوصی ضمیمے سے استفادہ کریں۔

    trump supporter
  2. ہم مل کر کام کریں گے: ٹرمپ

    trump

    امریکہ کے نومنتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے فتح کی تقریر کرتے ہوئے کہا کہ ’ابھی ابھی ہلیری کلنٹن نے فون کر کے ہمیں، ہم سب کو مبارک باد دی ہے۔‘

    ٹرمپ نے تسلیم کیا کہ ’ہلیری کلنٹن نے بڑا سخت مقابلہ کیا اور میں امریکہ کے لیے ان کی کوششوں کی قدر کرتا ہوں۔‘

    انھوں نے کہا کہ ’میں نے شروع ہی سے کہا تھا کہ یہ صرف ایک انتخابی مہم نہیں بلکہ تحریک تھی جس میں لاکھوں لوگوں نے حصہ لیا جو چاہتے تھے کہ حکومت لوگوں کی خدمت کرے گی۔‘

    انھوں نے کہا کہ ’ہم مل کر کام کریں گے اور امریکہ کو عظیم بنائیں گے۔

  3. ڈونلڈ ٹرمپ امریکہ کے 45ویں صدر منتخب

    trump

    خبررساں ادارے اے پی کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ ہلیری کلنٹن کو شکست دے کر امریکہ کے 45 ویں صدر منتخب ہو گئے ہیں۔

    انھوں نے یہ فتح کئی کلیدی ریاستوں میں یک بعد دیگرے کامیابی کے بعد حاصل کی، حالانکہ گذشتہ کئی ماہ سے رائے عامہ کے جائزوں میں کلنٹن کو ان پر برتری حاصل تھی۔

    فلوریڈا، اوہائیو اور شمالی کیرولائنا جیسی اہم سوئنگ سٹیٹس میں ٹرمپ کی کامیابی نے ان کی فتح کا راستہ ہموار کیا۔

    عالمی مارکیٹوں میں اتھل پتھل جاری ہے اور ڈاؤ میں 800 پوائنٹس کی کمی واقع ہو گئی ہے۔

  4. ’مقابلہ ابھی ختم نہیں ہوا ہے‘

  5. ’ہلیری آج شب خطاب نہیں کریں گی‘

    ہلیری کلنٹن کی انتخابی مہم کے سربراہ جان پوڈیسٹا نے کہا ہے کہ ہلیری آج شب خطاب نہیں کریں گی اور ان کے پاس آج کہنے کو کچھ نہیں ہے۔ ووٹوں کی گنتی جاری ہے اور ہر ووٹ اہم ہے۔ کئی ریاستوں میں سخت ترین مقابلہ ہے اس لیے ابھی میرے پاس کہنے کو کچھ نہیں۔ میں اس ہال اور ملک بھر میں موجود ہر شخص کو بتانا چاہتا ہوں کہ آپ کی آواز اور جوش و جذبہ ان (ہلیری) اور ہم سب کے لیے بہت معنی رکھتا ہے۔ ہمیں آپ پر فخر ہے اور ہمیں ہلیری پر بھی فخر ہے۔ انھوں نے شاندار کام کیا اور وہ ابھی رکی نہیں ہیں۔ آپ کا شکریہ کہ آپ ان کے ساتھ رہے ہیں اور وہ ہمیشہ آپ کے ساتھ رہیں گی۔ شب بخیر۔

  6. ریاست مین میں ووٹ منقسم

    اے بی سی نیوز کے تخمینے کے مطابق ریاست مین میں ہلیری کلنٹن نے جیت کر چار میں سے تین الیکٹورل ووٹ حاصل کر لیے ہیں، جب کہ ٹرمپ نے ایک ووٹ حاصل کیا ہے۔

    اب ٹرمپ کے کل الیکٹورل ووٹوں کی تعداد 245 ہو گئی ہے جب کہ ہلیری کلنٹن نے 218 ووٹ حاصل کر رکھے ہیں۔

    روایتی طور پر مین خالص ڈیموکریٹ ریاست رہی ہے، اور 2008 میں اوباما نے یہاں 17 فیصد کے فرق سے کامیابی حاصل کی تھی۔

    مین کا شمار امریکہ کی ان دو ریاستوں میں ہوتا ہے جہاں الیکٹورل ووٹ منقسم ہو سکتے ہیں۔ دوسری ریاست نیبراسکا ہے۔

  7. سیاسی تاریخ کا سب سے بڑا اپ سیٹ؟

    بی بی سی کی کیٹی کے کہتی ہیں کہ ’جہاں تک مجھے یاد پڑتا ہے یہ سیاست میں سب سے بڑا اپ سیٹ ہے۔‘

    ڈونلڈ ٹرمپ وہ امیدوار ہیں جن کا کوئی سیاسی پس منظر نہیں تھا، جنھوں نے ’قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی کی، جنھوں نے رائے عامہ کے جائزوں اور تمام پیشن گوئیوں کو غلط ثابت کر دیا۔

  8. ایوانِ نمائندگان میں رپبلکن پارٹی کی برتری

    خبررساں ادارے اے پی کے مطابق رپبلکن پارٹی نے ایوانِ نمائندگان میں برتری حاصل کر کے اپنی چھ سالہ برتری میں توسیع کر لی ہے۔

    ابھی ووٹوں کی گنتی جاری ہے لیکن رپبلکنز نے 218 نشستیں جیت کر برتری حاصل کر لی ہے۔

    بعض رپبلکنز کو خدشہ تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی منقسمانہ امیدواری کی وجہ سے انھیں نقصان ہو گا، لیکن ایسا نہیں ہوا۔

    دوسری جانب سینیٹ میں بھی ڈیموکریٹس کو گھاٹے کا سامنا ہے اور وسکانسن، شمالی کیرولائنا، انڈیانا اور فلوریڈا میں رپبلکنز نے کامیابی حاصل کی ہے۔ 

    capitol
  9. کلنٹن کے ہیڈکوارٹر پر مایوسی کے بادل

    کلنٹن

    ابھی کل ہی کی بات لگتی ہے کہ کلنٹن کے حامی ان کی بڑی کامیابی کی پیشن گوئیاں کر رہے تھے۔ لیکن آج رات کے نتائج نے انھیں غلط ثابت کر دیا ہے۔ بی بی سی کے کرس گبسن کہتے ہیں کہ نیویارک میں کلنٹن کے حامیوں پر مایوسی کا عالم طاری ہے۔ ایک خاتون نے بتایا کہ آج کی خبروں سے انھیں متلی آ رہی ہے۔

  10. نیواڈا میں کلنٹن فاتح

    ہلیری

    سوئنگ سٹیٹس میں شامل ریاست نیواڈا میں ہلیری کلنٹن نے کامیابی حاصل کر کے چھ ووٹ حاصل کر لیے ہیں۔ اب ان کے ووٹوں کی تعداد 215 ہو گئی ہے، تاہم وہ اب بھی ڈونلڈ ٹرمپ کے 244 الیکٹرول ووٹوں سے بہت پیچھے ہیں۔ گذشتہ نو انتخابات میں یہاں جو امیدوار جیتا ہے، وہی امریکی صدر بنتا ہے۔ 

  11. امریکہ کے لیے عظیم رات: ٹرمپ کے مشیر

    ٹرمپ کے سینیئر پالیسی مشیر کرٹس ایلس نے بی بی سی کو بتایا: ’یہ زبردست رات ہے۔ یہ امریکہ کے لیے عظیم رات ہے۔ یہ دنیا بھر کے لوگوں کے لیے عظیم رات ہے۔‘

    michigan
  12. نتائج کا انتظار

    بی بی سی اردو کی ارم عباسی ٹائمز سکوائر میں موجود تھیں جہاں انھوں نے عوام سے اب تک کے نتائج پر بات کی۔

    View more on facebook
  13. ہلیری کے حامیوں میں مایوسی

  14. جارجیا میں ڈونلڈ ٹرمپ کامیاب

    جارجیا میں 1996 سے رپبلکنز جیتے چلے آئے ہیں تاہم حالیہ انتخابات میں ان کی کامیابی کا تناسب کم ہوتا چلا جا رہا تھا، اس لیے ٹرمپ کو یہاں فتح سے خوشی ہو گی۔ اب ٹرمپ کے الیکٹورل ووٹوں کی تعداد 244 ہو گئی ہے جب کہ کلنٹن نے 209 ووٹ حاصل کر رکھے ہیں۔

  15. کلنٹن کیمپ کو مشی گن کا انتظار

  16. واشنگٹن میں کلنٹن، آئیووا میں ٹرمپ کامیاب

     اے بی سی نیوز کے مطابق ایک اور مغربی ریاست میں واشنگٹن میں ہلیری کلنٹن نے کامیابی حاصل کر لی ہے۔

    اس کے علاوہ آئیووا میں ٹرمپ نے فتح حاصل کی ہے۔ 

    الیکٹورل ووٹوں کی تازہ ترین گنتی کے مطابق ٹرمپ نے 228، جب کہ کلنٹن نے 209 ووٹ حاصل کیے ہیں۔

  17. ریاست اوریگن میں کلنٹن، یوٹا میں ٹرمپ کامیاب

    اے بی سی نیوز نے مغربی ساحلی ریاست اوریگن میں ہلیری کلنٹن کی جیت کا اعلان کیا ہے، جب کہ یوٹا میں ٹرمپ کامیاب ہو گئے ہیں۔

    براک اوباما نے 2012 میں یہاں 12 فیصد ووٹوں کے فرق سے فتح حاصل کی تھی۔ یہ ریاست 1988 سے ڈیموکریٹ رہی ہے۔ 

    دوسری جانب 2012 میں رپبلکن امیدوار رومنی یوٹا سے بھاری اکثریت سے کامیاب ہوئے تھے۔

    تازہ ترین نتائج کے مطابق ہلیری کلنٹن نے اب تک 197 جب کہ ٹرمپ نے 222 لیکٹورل ووٹ حاصل کیے ہیں۔

  18. بریکنگاہم سوئنگ سٹیٹ فلوریڈا میں ٹرمپ کامیاب

    ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک اور اہم سوئنگ سٹیٹ فلوریڈا میں کامیابی حاصل کر لی ہے۔ اس ریاست سے ٹرمپ کو 29 الیکٹورل ووٹ حاصل ہوں گے۔ یہاں 2008 اور 2012 میں اوباما جیتے تھے۔

    اس فتح کے نتیجے میں ٹرمپ کے الیکٹورل ووٹوں کی تعداد 222 تک پہنچ گئی ہے جبکہ ہلیری کے ووٹوں کی تعداد 209 ہے۔

    trump