Got a TV Licence?

You need one to watch live TV on any channel or device, and BBC programmes on iPlayer. It’s the law.

Find out more
I don’t have a TV Licence.

خلاصہ

  1. غزہ میں اسرائیلی سرحد کے قریب چھ ہفتوں سے مظاہرے جاری ہیں لیکن امریکہ کا سفارتخانہ تل ابیب سے یروشلم میں منتقل کیے جانے کے موقع پر ان میں شدت آئی ہے
  2. امریکی سفارتخانے کا افتتاح ریاست اسرائیل کے قیام کے 70ویں سالگرہ کے موقعے پر کیا گیا ہے
  3. ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کیے جانے سے اس مسئلے پر دہائیوں سے جاری امریکی غیرجانبداری میں فرق آیا ہے اور وہ بین الاقوامی برادری کی اکثریت سے علیحدہ ہو گیا ہے۔
  4. فلسطینی صدر محمود عباس نے صدر ٹرمپ کے سفارتخانے کو منتقل کرنے کے فیصلے کو 'صدی کا تھپڑ' قرار دیا ہے
  5. اسرائيل یروشلم کو اپنا ازلی اور غیر منقسم دارالحکومت کہتا ہے جبکہ فلسطینی مشرقی یروشلم پر اپنا دعویٰ پیش کرتے ہیں جس پر اسرائیل نے سنہ 1967 کی مشرق وسطی کی جنگ میں قبضہ کر لیا تھا۔

لائیو رپورٹنگ

پیشکش: ذیشان حیدر، شیراز حسن

time_stated_uk

  1. بریکنگ’ہلاکتوں کی تعداد 52، 2000 سے زیادہ افراد زخمی‘

    فلسطینی محکمۃ صحت کے حکام کا کہنا ہے کہ غزہ میں جھڑپوں کے دوران ہلاکتوں کی تعداد 52 ہوگئی ہے جبکہ 2000 سے زیادہ افراد زخمی ہوئے ہیں۔

    گذشتہ چھ ہفتے سے اسرائیل غزہ سرحد پر نئی باڑ کے خلاف جاری مظاہروں میں آج سب سے زیادہ پرتشدد دن تھا۔

  2. بریکنگامریکہ ابھی بھی فلسطینیوں اور اسرائیلوں کے ساتھ مل کر امن قائم کرنا چاہتا ہے: وائٹ ہاؤس

    امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے امریکی سفارتخانے کی یروشلم منتقلی پر ویڈیو بیان کے بعد وائٹ ہاؤس نے ایک بریفنگ نوٹ جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اس اقدام کا یہ مطلب نہیں کہ امریکہ نے اسرائیلی فلسطینی تنازع کے مذاکرات میں ایک حتمی پوزیشن لے لی ہے۔

    وضاحتی نوٹ میں کہا گیا ہے سفارتخانے کی منتقلی اسرائیل اور فلسطین کے درمیان امن کی اہم ضرورت تھی۔

    Gaza
  3. بریکنگPost update

    اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق زید راد الحسین نے غزہ اسرائیل سرحد پر تشدد کی مذمت کی ہے۔

  4. بریکنگ’امریکہ غلط وقت پر غلط چال چل رہا ہے‘

    برطانوی سیکریٹری خارجہ بورس جانسن کا کہنا ہے کہ وہ غزہ میں ’انسانی جانوں کے ضیاع پر انتہائی غمزدہ ہیں۔‘ ان کا کہنا تھا کہ ’ہم سمجھتے ہیں کہ کچھ لوگ تشدد کو اشتعال دے رہے ہیں۔ لیکن دوسری جانب کو ہتھیاروں کے استعمال میں تحمل کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔‘

    بورس جانس نے کہا کہ برطانیہ یروشلم میں امریکی سفارتخانے کو منتقل کرنے کے فیصلے سے اتفاق نہیں کرتا اور وہ یہ سمجھتے ہیں کہ امریکہ ’غلط وقت پر غلط چال چل رہا ہے۔‘

    غزہ
  5. بریکنگ’ہلاکتوں کی تعداد 43، 2238 افراد زخمی‘

    فلسطینی محکمۃ صحت کے حکام کا کہنا ہے کہ غزہ میں جھڑپوں کے دوران ہلاکتوں کی تعداد 43 ہوگئی ہے جبکہ 2238 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

    گذشتہ چھ ہفتے سے اسرائیل غزہ سرحد پر نئی باڑ کے خلاف جاری مظاہروں میں آج سب سے زیادہ پرتشدد دن تھا۔

    غزہ
  6. بریکنگامریکی وزیرِ خارجہ کی سفارتخانہ منتقل کرنے کے اقدام کی تعریف

    امریکی وزیرِ خارجہ مائیک پومپے نے اب تک غزہ میں کشیدگی اور ہلاکتوں کے بارے میں ابھی تک کوئی بیان نہیں دیا ہے۔ اس سے قبل انھوں نے امریکی صدر ٹرمپ کے سفارتخانہ یروشلم منتقل کرنے کے امریکی فیصلے کی تعریف کی تھی۔

    ان کا مکمل بیان مندرجہ ذیل ہے:

    Gaza
  7. بریکنگفلسطینی علاقوں میں ہلاکتوں کے سوگ میں ہڑتال کا اعلان

    پی ایل او کی جانب سے ہلاکتوں پر عام ہڑتال کا مطالبہ فلسطین لبریشن آرگنائزیش نے مبینہ طور پر اسرائیل غزہ سرحد پر ہونے والی ہلاکتوں پر سوگ میں عام ہڑتال کا مطالبہ کیا ہے۔

    فلسطین کی سرکاری نیوز ایجنسی وافا کے مطابق پی ایل او کی ایکزیگٹیو کمیٹی رکن وصل ابو یوسف نے فلسطینی علاقوں میں ’مکمل ہڑتال‘ کا اعلان کیا ہے۔

    غزہ
  8. بریکنگ’امریکہ نے دنیا کی بے عزتی کی ہے‘

    فلسطینی صدر محمود عباس کے ترجمان نے تنبیہ کی ہے کہ یروشلم میں امریکی سفارتخانہ کھولنے سے مشرقِ وسطیٰ مزید عدم استحکام کا شکار ہوگا۔

    انھوں نے کہا کہ ’اس اقدام سے امریکی انتظامیہ نے امن کے عمل میں اپنا کردار منسوخ کر دیا ہے اور دنیا، فلسطینی عوام، اور عرب دنیا کی بے عزتی کی ہے۔‘

    غزہ
  9. بریکنگ’فلسطینی آگ کے گولے پھینک رہے ہیں‘

    اسرائیلی ڈیفینس فورسز کا کہنا ہے کہ اسرائیل غزہ سرحد پر 13 مقامات 40،000 فلسطینی ’پرتشدد مظاہروں‘ میں شریک ہیں، اور یہ ان کی ذمہ داری ہے کہ وہ اسرائیلی علاقوں اور شہریوں کے تحفظ کے مشن کو مکمل کریں۔

    بیان کے مطابق ’مظاہرین آگ کے گولے اور آتش گیر مواد حفاظتی باڑ اور آئی ڈی ایف فوجیوں پر پھینک رہے ہیں اور ٹائر جلا رہے ہیں، پتھر پھینک رہے ہیں اور اسرائیلی علاقوں اور آئی ڈی ایف فوجیوں کو نقصان پہنچانے کے لیے جلتی ہوئی اشیا پھینک رہے ہیں۔‘

    انسانی حقوق کی تنظیموں بشمول ایمنیسٹی انٹرنیشنل اور ہیومن رائیٹس واچ کی اسرائیل فوج کی جانب سے طاقت سے استعمال کی مذمت کی ہے۔

    غزہ
  10. Post update

    اسرائیل
  11. بریکنگغزہ میں اسرائیلی جنگی طیارے کی کارروائی

    اسرائیل ڈیفنس فورسز کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق ایک اسرائیلی جنگی طیارے نے شمالی غزہ میں فلسطینی عسکریت پسند گروپ حماس کے ایک عسکری تربیتی مرکز کو نشانہ بنایا ہے۔

    بیان کے مطابق یہ فضائی حملہ ’حماس کی جانب سے حفاظتی باڑ پر گذشتہ چند گھنٹوں سے جاری پرتشدد واقعات کے جواب میں کیا گیا ہے۔‘

    غزہ
  12. بریکنگاسرائیلی فوج کی فلسطینی مظاہرین کے خلاف شدید کارروائی: تصاویر میں

    بیت المقدس میں امریکی سفارتخانے کے افتتاح سے قبل غزہ میں اسرائیلی فوج اور فلسطینیوں کے درمیان شدید جھڑپیں جاری ہیں جن میں درجنوں فلسطین ہلاک ہوئے ہیں۔ دیکھیے تصاویر میں

    غزہ
  13. بریکنگمصر کی اسرائیلی فوج کے طاقت کے استعمال کی مذمت

    مصر کی وزارت خارجہ کی جانب سے اسرائیل فوج کی جانب سے سرحد پر طاقت کے استعمال پر مذمتی بیان جاری کیا گیا ہے۔

    ’مصر قانونی حقوق کا مطالبہ کرنے والے پرامن مظاہرین پر طاقت کے استعمال کو مسترد کرتا ہے، اور مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں اس کی بڑھتی ہوئی خطرناک کیشدگی کے منفی نتائج کے حوالے سے خبردار کرتا ہے۔‘

    غزہ
  14. ’امریکہ عالمی قانون کی خلاف ورزی کر رہا ہے‘

    فلسطینی وزارتِ خارجہ نے ایک بیان میں امریکی انتظامیہ پر طاقت کے زعم میں فلسطینیوں کے حقوق رد کرنے کا الزام عائد کیا ہے اور زور دیا ہے کہ بیت المقدس کی قسمت کا فیصلہ صرف عالمی قانون کے مطابق ہی کیا جائے گا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ جب کہ فلسطینی عوام اپنے ساتھ روا رکھی جانے والی ناانصافی کے 70 سال کی یادگار منا رہے ہیں، امریکی انتظامیہ نے بیت المقدس میں عالمی قوانین کی خلاف ورزی کر کے اور فلسطینیوں کے حقوق سے متعلق سلامتی کونسل کی قراردادوں کو مسترد کر کے ان کے زخموں پر نمک چھڑکا ہے۔ وزارتِ خارجہ کا کہنا ہے کہ فلسطینی قیادت تمام قانونی اور سفارتی ذرائع استعمال کر کے اسرائیل کی نوآبادیاتی اور جارحانہ حکومت سے اپنے عوام کے حقوق کا تحفظ کرتی رہے گی لیکن یہ عالمی ذمہ داری بھی ہے۔

    غزہ
  15. ’سبھی سے انتہائی تحمل کا مظاہرہ کرنے کی توقع کرتے ہیں‘

    یورپی یونین کے خارجہ پالیسی کے سربراہ فیڈریکا موغرینی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’غزہ کی باڑ کے نزدیک جاری مظاہروں میں درجنوں فلسطینی، جن میں بچے بھی شامل ہیں، اسرائیلی فائرنگ میں ہلاک ہو چکے ہیں۔ ہم مزید جانوں کے ضیاع کو روکنے کے لیے سبھی سے انتہائی تحمل کا مظاہرہ کرنے کی توقع کرتے ہیں۔‘

    غزہ
  16. بریکنگ’آپ نے تاریخ کو تسلیم کر کے تاریخ رقم کر دی ہے‘

    اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نتن یاہو نے سفارتخانے کے افتتاح کے بعد اپنے خطاب میں کہا ہے کہ آج تاریخ رقم ہوئی ہے۔ انھوں نے امریکی صدر ٹرمپ، ان کی بیٹی اور داماد کا ذاتی طور پر شکریہ ادا کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ’صدر ٹرمپ آپ نے تاریخ کو تسلیم کر کے تاریخ رقم کر دی ہے۔‘ نتن یاہو نے یہ بھی کہا کہ امریکہ اسرائیل کا سب سے بڑا اتحادی رہا ہے۔

    غزہ
  17. بریکنگاسرائیلی سمجھتے ہیں کہ انھیں کھلی چھٹی مل گئی ہے: مصطفیٰ برغوتی

    فلسطین کے ایک آزاد رکن پارلیمان مصطفیٰ برغوتی نے بی بی سی کو بتایا کہ امریکی سفارتخانے کی منتقلی سے کشیدگی اور خون خرابے میں اضافہ ہوگا۔

    انھوں نے کہا کہ ’اسرائیلی سمجھ رہے کہ انھیں امریکیوں کی جانب سے جو کچھ وہ کرنا چاہتے ہیں اس کی کھلی چھٹی مل گئی ہے۔ آج جو ہم دیکھ رہے ہیں وہ اصل قتل عام ہے۔ تاحال، اسرائیلیوں نے ہمارے پر امن احتجاجوں کا جواب آتشیں اسلحے سے دیا ہے۔ یہ بہت خطرناک صورتحال ہے اور یہ فلسطینی جانب سے کا بہت نقصان ہوگا۔‘ .

    غزہ
  18. غزہ، اسرائیل سرحد کے مناظر

    غزہ
    غزہ
    غزہ
    غزہ
  19. بریکنگانتونیو گوتیرز غزہ میں ہلاکتوں سے پریشان

    اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیرز نے غزہ میں ہلاکتوں کی بڑھتی تعداد پر شدید تشویش ظاہر کی ہے۔ خبر رساں ادارے اے پی کے مطابق ویانا میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ’میں غزہ سے آنے والی ان خبروں سے نہایت پریشان ہوں کہ وہاں لوگوں کی بڑی تعداد ہلاک ہوئی ہے۔

    فلسطین