آخری وقت اشاعت:  جمعرات 15 جولائ 2010 ,‭ 16:00 GMT 21:00 PST

’تیرے بن لادن‘ تیاری کی جھلکیاں

میڈیا پلئیر

اس مواد کو دیکھنے/سننے کے لیے جاوا سکرپٹ آن اور تازہ ترین فلیش پلیئر نصب ہونا چاہئیے

ونڈوز میڈیا یا ریئل پلیئر میں دیکھیں/سنیں

پاکستان فلم سینسر بورڈ نے پاکستانی گلوکارہ علی ظفر کی پہلی فلم ’تیرے بن لادن‘ کی نمائش کی اجازت دینے سے انکار کردیا ہے، یہ فلم جمعہ کو پاکستان کی سنیما گھروں میں نمائش کے لیے پیش ہونی تھی۔

سینسر بورڈ کے نائب چیئرمین مسعود الہی نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اسامہ بن لادن کی وجہ سے فلم پر اعتراض کیا گیا ہے، ان کے مطابق ڈسٹری بیوٹر نے سینسر بورڈ کے فیصلہ کے خلاف اپیل دائر کی ہے جس کا فیصلہ ایک دو روز میں ہوجائیگا۔

محکمہ ثقافت کا یہ اپیلٹ بورڈ بارہ اراکین پر مشتمل ہے جس میں چھ سرکاری اور چھ نجی اراکین شامل ہیں۔ یہ بورڈ فلم اس کے بارے میں حتمی فیصلہ کرے گا۔ سینسر بورڈ کے اعتراض سے قبل ہی فلم کا نام ’تیرے بن لادن‘ سے تبدیل کرکے صرف تیرے بن کردیا گیا تھا۔

[an error occurred while processing this directive]

BBC navigation

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔