آخری وقت اشاعت:  جمعرات 13 جنوری 2011 ,‭ 15:57 GMT 20:57 PST

لبنان کی مخلوط حکومت ختم

میڈیا پلئیر

اس مواد کو دیکھنے/سننے کے لیے جاوا سکرپٹ آن اور تازہ ترین فلیش پلیئر نصب ہونا چاہئیے

ونڈوز میڈیا یا ریئل پلیئر میں دیکھیں/سنیں

حزب اللہ اور اس کے اتحادیوں کی طرف سے لبنان کي مخلوط حکومت سے علیحدگی کی لبنان کي مخلوط حکومت ختم ہوگئي ہے۔

حزب اللہ نےمخلوط حکومت سے اپنے حمايت واپس لينے کا فيصلہ موجودہ وزير اعظم سعد حريري کے والد رفيق حريري کے قتل کي تحقيق کے ليے قائم کردہ اقوام متحدہ کے کميشن کي طرف سے حزب اللہ کے ممبران پر فرد جرم عائد کرنے کے اشاروں کے بعد ہوا ہے۔
رفيق حريري کو 2005 ميں قتل کر ديا گيا تھا۔

جب لبنان کي حکومت ختم ہو رہي تھي تو لبنان کے وزير اعظم سعد حريري امريکہ کے صدر براک اوباما کے ملاقات کر رہے تھے۔


حزب اللہ اوراس اتحاديوں کي طرف سے وزارتوں سے استعفيٰ کےبعد وزير اعظم سعد حريري اس وقت نگران وزير اعظم کے طور پر کام کريں گےجب تک صدر نئي حکومت کي تشکليل نہیں کر ليتے۔

لبنان کے آئين کے مطابق ایک تہائي وزراء کےمستعفيٰ ہو جانےسے حکومت گر جاتي ہے۔

شام اور سعودي عرب نے حکومت کو بچانے کے ليے کوششيں کیں ليکن حزب اللہ اور اس اتحاديوں نے عين اس وقت حکومت گرانے کا اعلان کياجب وزير اعظم سعد حريري امريکي صدر سے ملاقات کر رہےتھے۔

[an error occurred while processing this directive]

BBC navigation

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔