کراچی، لاہور: فیکٹریوں میں آتشزدگی

آخری وقت اشاعت:  بدھ 12 ستمبر 2012 ,‭ 03:58 GMT 08:58 PST
  • پاکستان کے شہر کراچی کی ایک گارمنٹس فیکٹری میں منگل کو آگ لگنے سے خواتین سمیت کم سے کم ستاون افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔
  • گورنر سندھ نے شہر میں بدھ کو یوم سوگ کا اعلان کیا ہے۔
  • سندھ کے صوبائی وزارتِ صحت کے ترجمان کے مطابق کراچی کے سول ہسپتال میں بتیس لاشیں جبکہ جناح ہسپتال میں پچیس لاشیں لائی گئی ہیں۔آتشزدگی کے واقعے میں ہلاک ہونے والوں میں پانچ خواتین بھی شامل ہیں۔
  • خدشہ ظاہر کیا ہے کہ فیکٹری میں آتشزدگی کے باعث ہلاکتوں میں اضافہ ہو سکتا ہے۔فائر بریگیڈ کے مطابق یہ آگ فیکٹری کی تین منزلہ عمارت کی بالائی منزل پر منگل کی شام کو لگی جس نے بعد میں پوری فیکٹری کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔
  • وزیرِ ذاخلہ رحمان ملک نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ انہوں نے فیکٹری کے مالکان کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کرنے کی ہدایات جاری کر دی ہیں۔
  • فیکٹری میں کام کرنے والے افراد کے مطابق فیکٹری میں چار سو سے زیادہ افراد کام کرتے ہیں تاہم پانچ بجے زیادہ تر افراد فیکٹری سے جا چکے تھے اور فیکٹری میں ایک سو کے لگ بھگ افراد کام میں مصروف تھے۔
  • اس سے پہلے منگل کو صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور کے نواحی علاقے میں جوتے بنانے والے ایک کارخانے میں آتشزدگی سے کم از کم اکیس افراد ہلاک اور چودہ زخمی ہو گئے۔
  • یہ آگ منگل کی دوپہر بند روڑ کے قریب علاقے فیروز والا میں واقع فیکٹری میں لگی اور مرنے والوں میں سے زیادہ تر کی موت دم گھٹنے سے ہوئی۔
  • لاہور کے ضلعی رابطہ آفیسر نور الامین مینگل کا کہنا ہے کہ ابتدائی اطلاعات کے مطابق فیکٹری کے جنریٹر میں آگ لگی جس نے عمارت میں موجود کیمیکل کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔پولیس کے مطابق بعض لاشیں اتنی بری جھلس گئی ہیں کہ ان کی شناخت کرنے میں مشکل ہو رہی ہے۔
  • ریسکیو ڈبل ون ڈبل ٹو کے مطابق جس وقت فیکٹری میں آگ لگی اس وقت عمارت میں پینتیس افراد موجود تھے۔
  • پولیس کے مطابق بعض لاشیں اتنی بری جھلس گئی ہیں کہ ان کی شاخت کرنے میں مشکل ہورہی ہے۔
  • ادھر پنجاب حکومت نے اس واقعہ کی تحقیقات کا حکم دے دیا اور وزیراعلیٰ پنجاب کی معائنہ ٹیم اس واقعے کی تحقیقات کرے گی۔

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔