اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

چودہ برس میں کیا گزری؟

بھارت کے دارالحکومت دلی میں واقع جامعہ ٹیچرز سولیڈارٹی ایسوسی ایشن یعنی جے ٹی ایس کی ایک تازہ رپورٹ میں 1992 سے اب تک کے ان سولہ افراد کے معاملات پیش کیے گئے ہیں جنہیں دلی پولیس کے سپیشل سیل نے مختلف بم دھماکوں کے سلسلے میں شدت پسندی کے الزام گرفتار کیا تھا۔ لیکن عدالت نے ان معصوم قرار دیتے ہوئے رہا کردیا۔

مقبول شاہ کو دلی پولیس کی سپیشل سیل نے اکیس مئی 1996 میں دلی کے لاجپت نگر علاقے میں ہوئے بم دھماکوں اور شدت پسند تنظیم جے کے ایل ایف سے تعلق رکھنے کے الزام میں گرفتار کیا۔ گرفتاری کے وقت مقبول شاہ کی عمر صرف اٹھارہ برس تھی۔ مقبول شاہ نے اپنی زندگی کے قیمتی چودہ برس مختلف جیلوں میں گزارے۔ آخر کار آٹھ اکتوبر دو ہزار دس کو دلی کی ایک عدالت نے انہیں معصوم قرار دیا اور احکامات دیے کہ مقبول شاہ کی گرفتاری میں ملوث پولیس اہلکاروں کے خلاف کاروائی کی جائے۔ ہماری نامہ نگار خدیجہ عارف نے مقبول شاہ سے پوچھا کہ ان چودہ برسوں میں ان پر کیا گزری