نیویارک میں مختلف مذاہب کے رنگ

آخری وقت اشاعت:  منگل 20 نومبر 2012 ,‭ 05:53 GMT 10:53 PST

نیویارک کے مختلف مذہبی رنگ

  • بہت سے اطالوی نژاد افراد بیلمونٹ کا علاقہ چھوڑ چکے ہیں مگر اب بھی ہر ہفتے وہاں واقع ’لیڈی آف مونٹ کارمل‘ گرجا گھر اطالوی زبان میں مذہبی رسومات میں شرکت کے لیے جاتے ہیں۔
  • سنہ انیس سو ستائیس میں بننے والا اور کوئینز کے علاقے میں واقع ’سینٹ ڈیمیٹری کتھیڈرل‘ ملک کی سب سے بڑی ہیلینک برادری استعمال کرتی ہے۔
  • مرید اسلامک کمیونٹی آف امریکہ نیویارک کے ہارلم علاقے میں رہتے ہیں اور ہفتے میں کم از کم ایک دفعہ ضرور ملتے ہیں
  • ہارلم میں ہی ’اولڈ براڈوے سناگوگ‘ سنہ انیس سو تیئس سے ایک ہی مقام پر مذہبی تقریبات کا انعقاد کر رہا ہے۔
  • گوندا ہرے کرشنا مندر میں ایک تقریب میں شریک ایک شخص نے وویانہ پریتی کو کہا ’دوسرے مذہب بہت سنجیدہ ہیں، مجھے زندگی میں رنگ اور خوشی چاہیے۔‘
  • یونین سکوائر میں سیکنڈ برانچ مورمن تقریبات اشاروں کی زبان میں منعقد کی جاتی ہیں
  • ہر ہفتے جمعہ کو، مسلمان دوپہر کے وقت اجتماعی نماز پڑھتے ہیں
  • زِن سنٹر آف نیو یارک شہر میں موجود بدھ مت کے تربیتی مراکز میں سے ایک ہے
  • بہت سے لوگ ’ووڈو‘ کو پسند نہیں کرتے تاہم وویانہ پریتی کو اس مذہب سے منسلک ایک برادری نیویارک میں ملی جو کہ اپنے وطن، آباءواجداد اور عقائد کو تھامے ہوئے ہے
  • فوٹوگرافر وویانہ پریتی نے اپنی تحقیق کے بعد نیو یارک میں بلیک اینڈ وائٹ تصاویر کھینچی۔ ان کا کہنا ہے کہ رنگ ان کو پرکشش مگر جعلی بنا دیتا ہے

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔