’آئین کے تحت آڈٹ کرانا لازم ہے‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 27 نومبر 2012 ,‭ 18:29 GMT 23:29 PST

میڈیا پلئیر

پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی رکن کا کہنا ہے کہ آئین کے تحت ایسے ادارے کے لیے آڈٹ کرانا لازم ہے جو حکومت سے فنڈنگ یا مراعات لے رہا ہو۔

سنئیےmp3

اس مواد کو دیکھنے/سننے کے لیے جاوا سکرپٹ آن اور تازہ ترین فلیش پلیئر نصب ہونا چاہئیے

متبادل میڈیا پلیئر چلائیں

پاکستان کے آڈیٹر جنرل نے کہا ہے کہ ملک کی فوج کے لیے اسلحہ اور گاڑیاں تیار کرنے والی فیکٹری ہیوی انڈسٹریز ٹیکسلا میں اربوں روپے کے ایسے خفیہ اکاؤنٹس ہیں جن کے بارے میں حکومت ابھی تک لاعلم ہے۔

پارلیمنٹ کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی رکن اور پیپلز پارٹی کی رکن قومی اسمبلی یاسمین رحمان نے بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کے آئین کے تحت ایسے ادارے کے لیے آڈٹ کرانا لازم ہے جو حکومت سے فنڈنگ لے رہا ہو یا حکومت سے کسی قسم کی مراعات لے رہا ہے۔

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔