قلعہ بھٹیاں والا مسجد میں مذہبی رواداری

آخری وقت اشاعت:  اتوار 13 جنوری 2013 ,‭ 14:04 GMT 19:04 PST

گندم کے کھیتوں کے درمیان واقع گاؤں قلع بھٹیاں والا کے شیعہ فرقے کے لوگوں کو یہ علم نہیں کہ ملک میں دوسری جگہ ان کے فرقے کو کس قدر تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

یہاں کے تین ہزار باسی اپنے سنی پڑوسیوں کے ساتھ پرامن طریقے سے رہتے ہیں۔ وہ ایک ہی مسجد میں عبادت کرتے ہیں اور ایک دوسرے کے جلوس کی تعظیم کرتے ہیں، ساتھ ہی پلے بڑھے ہیں، آپس میں شادیاں کرتے ہیں اور کسی خوف یا تادیب کے بغیر امن کے ساتھ زندگی گذارتے ہیں۔

جمعہ کے دن دوپہر کے بعد وہاں کی واحد سنگ مرمر کے فرش والی چھوٹی سی مسجد میں شیعہ اور سنی موذن نے باری باری اذان دی اور دونوں فرقے کے لوگوں نے باری باری وضو کیا اور مسجد میں نماز ادا کرنے کے لیے داخل ہو گئے۔

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔