’چڑیا گھر کے انتظامیہ کی لاپرواہی تھی‘

آخری وقت اشاعت:  پير 21 جنوری 2013 ,‭ 14:07 GMT 19:07 PST

میڈیا پلئیر

کانپور کے چڑیا گھر میں آوارہ کتوں کے حملے کی سبب اکتیس کالے ہرن ہلاک ہوئے ہیں۔ اس واقعے کے اہم تفتیش کار اور اترپردیش کے چیف وائلڈ لائف کنزرویٹر کا کہنا ہے کہ چڑیا گھر کی لاپرواہی کی وجہ سے یہ واقعہ ہوا ہے۔

سنئیےmp3

اس مواد کو دیکھنے/سننے کے لیے جاوا سکرپٹ آن اور تازہ ترین فلیش پلیئر نصب ہونا چاہئیے

متبادل میڈیا پلیئر چلائیں

بھارت کی ریاست اترپردیش کے شہر کانپور میں آوارہ کتوں نے ایک چڑیا گھر میں گھس کر اکتیس کالے ہرنوں کو ہلاک کر دیا ہے۔ بھارت میں کالا ہرن ایک نایاب جانور ہے اور اس کا شکار قانونی جرم ہے۔ کانپور کے چڑیا گھر میں پیش آنے والا یہ واقعہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ ہے۔ ریاستی حکومت نے تفتیش کے احکامات دے دیے ہیں۔ اس واقعے کی ابتدائی تفتیش کرنے والے اترپردیش میں جنگلات کے چیف کنزرویٹر روپک دے سے ہماری نامہ نگار خدیجہ عارف نے پوچھا کہ یہ پورا واقعہ ہے کیا۔۔۔

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔