بدھ سترہ اپریل کا سیربین

بدھ سترہ اپریل کو نشر ہونے والے بی بی سی اردو سروس کے ٹی وی پروگرام سیربین کے چاروں حصے آپ اس صفحے پر دیکھ سکتے ہیں۔ یہ پروگرام ایکسپریس نیوز پر نشر کیا گیا تھا۔

سیربین ہفتے میں تین دن یعنی پیر، بدھ اور جمعے کو پاکستان کے مقامی وقت کے مطابق رات گیارہ بجے ایکسپریس نیوز پر نشر ہوتا ہے۔

انتخابی مہم اور عوامی نیشنل پارٹی کے مسائل

عوامي نيشنل پارٹي کے رہنما غلام احمد بلور کے جلسے پر گزشتہ روز ايک حملے ميں سترہ افراد ہلاک ہو گئے۔ جمہوريت اور جمہوري عمل پر يقين رکھنے والي سياسي جماعتيں اے این پی پر حملوں کے حوالے سے مستقل خاموشي اختيار کيے ہوئے ہيں۔ اس تناظر ميں اے اين پي نے آج آل پارٹيز کانفرنس بھي بلائي۔

اس ساري صورت حال پر نظر ڈالي ہے پشاور سے ہمارے نامہ نگار عزيز اللہ خان نے۔

اس حوالے سے عوامي نيشنل پارٹي کے سينیئر رہنما حاجي عديل سے خصوصی انٹرویو کیا گیا جو اس حصے میں شامل ہے۔

اسی صورتحال پر بي بي سي پاکستان کے ايڈيٹر ہارون رشيد سے گفتگو بھی اسی حصے میں ہے۔

سب سے آخر میں دیکھیے سوشل میڈیا پر آنے والی آپ کی آراء۔

عالمی خبریں، اوباما کے نام آنے والا مشتبہ خط، اور گجرات کے ’ڈھو‘

اس حصے میں پہلے شامل ہیں عالمی خبریں۔

دیکھیے کہ امریکی خفیہ اداروں کو صدر اوباما کے نام لکھے گئے خط میں کیا مسئلہ ہے جو امریکی خفیہ ادارے پریشان ہیں اور بوسٹن ميراتھن کے دوران ہونے والے بم دھماکوں میں کیا پیش رفت ہوئی ہے۔ دیکھیے تفصیل مہوش حسین سے۔

اس کے علاوہ مزید عالمی خبریں بھی اسی حصے میں شامل ہیں۔

آخر میں دیکھیے بھارت کی ریاست گجرات کے شہر مانڈوی میں گزشتہ کئی صدیوں سے مشرق وسطی اور افریقی ملکوں سے سمندری راستوں کے ذریعے تجارت کے لیے لکڑی کے سمندری جہاز بنانے کی صنعت منافع بخش رہی ہے۔ مقامی طور پر ان لکڑی کے سمندری جہازوں کو ڈھو کہا جاتا ہے۔ صومالی قذاقوں کی جانب سے سمندری جہازوں پر حملوں کے بعد سے سنہ دو ہزار دس میں نئے قوانین متعارف کرائے گئے تھے جن کے بعد ان چھوٹے جہازوں پر پابندی عائد کر دی گئی تھی۔

دیکھیے گا کہ کیسے اس قانون سازی کے بعد مانڈوی میں جہاز سازی کی صنعت زوال کا شکار ہے۔

پاکستانی ٹی وی چینلز اور ریٹنگ کی دوڑ

گذشتہ کئی مہینوں سے پاکستان کے نجی نیوز چینلز کی ریٹنگز گر رہی ہیں جسے نیوز چینلز اور اینکرز دونوں قابلِ اعتماد نہیں سمجھتے، لیکن اس کے باوجود ان کو بڑھانے کے لیے خبروں اور ٹاک شوز میں سنسنی اور مصالحہ بھی ڈالتے ہیں۔ دیکھیے کہ انتخابات نے اس ریٹنگز کی دوڑ پر کیا اثر ڈالا ہے۔

اسلام آباد سے عنبر شمسی کی رپورٹ

ميڈيا کا کردار آنے والے انتخابات ميں کافي اہم ہے۔ اسي تناظر ميں ڈان کے ايڈيٹر ظفر عباس کراچی سے پروگرام میں شامل ہوئے۔

سب سے آخر میں دیکھیے آپ کی جانب سے سوشل میڈیا پر آنے والی آپ کی آراء۔

کلک

اس حصے میں شامل ہوتا ہے ہفتہ وار سلسہ ’کلک‘۔

وقت کے ساتھ ساتھ ٹيکنالوجي انسانوں کي ضروريات کو سمجھنے اور انہيں پورا کرنے ميں کافي حد تک کامياب ہوتي جا رہي ہے۔ آواز انسان کي انفراديت کي پہچان ہے حالانکہ ٹيکنالوجی کا کردار ويسے تو مصنوعي ہے ليکن ٹيکنالوجي کے ذريعے انساني صلاحيتوں کو ان کي قدرتي حالت ميں محفوظ رکھنے کي کوشش جاري ہے۔ اس کي مزيد تفصيل اور ٹيکنالوجي کي دنيا سے ديگر خبروں کے ساتھ نوشين عباس۔

اسی بارے میں