اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پیر تیرہ مئی کا سیربین، حصۂ اول

پاکستان کے عام انتخابات میں مسلم لیگ نواز کی کامیابی کے بعد اب بات ہو رہی ہے کہ ملک کو درپيش مسائل اور چيلنچز کا سامنے کرنے کي اُن ميں کتني صلاحيت ہے۔ دہشت گردی، لوڈ شیڈنگ اور بےروزگاری جيسے مسائل پر بی بی سی اردو کے شفيع نقي جامعي نے میاں نواز شريف سے خصوصی انٹویو لیا۔

یہ انٹرویو اس پروگرام میں مختلف حصوں میں دکھایا جائے گا مگر اس حصے کے شروع میں دیکھیے کہ نئی حکومت کو کن مسائل کا سامنا ہو گا ان مسائل کا جائزہ لينے کي کوشش کي اسلام آباد میں نامہ نگار ہارون رشید نے۔

اليکشن کے بعد مسلم ليگ نواز کے رہنما اور متوقع وزير اعظم نواز شريف سے انٹرويو ميں بي بي سي اردو کے شفيع نقي جامعي نے پوچھا کہ پاکستان میں اسلام کے نام پر جو تشدد ہورہا ہے، جو بم حملے اور خونریزی ہورہی ہے اِن دہشت گردوں اور انتہا پسندوں سے وہ کیسے نمٹيں گے؟

مياں نواز شريف کو وزيراعظم بننے کے بعد جن چيلنچز کا سامنا ہوگا اُن کے جائزے اور تجزيے کے ليے پروگرام میں لندن سٹوڈيو ميں موجود تھے امريکي تھنک ٹينک سٹريٹفور سے منسلک کامران بخاري اور تجزيہ نگار امين مغل جبکہ بي بي سي اسلام آباد سٹوڈيو سے براہ راست پروگرام میں شریک تھیں سابق سفارت کارڈاکٹر مليحہ لودھي۔