پیر بیس مئی کا سیربین

پیر بیس مئی کو نشر ہونے والے بی بی سی اردو سروس کے ٹی وی پروگرام سیربین کے چاروں حصے آپ اس صفحے پر دیکھ سکتے ہیں۔ یہ پروگرام ایکسپریس نیوز پر نشر کیا گیا تھا۔

سیربین ہفتے میں تین دن یعنی پیر، بدھ اور جمعے کو پاکستان کے مقامی وقت کے مطابق رات گیارہ بجے ایکسپریس نیوز پر نشر ہوتا ہے۔

طالبان سے مذاکرات کیا ممکن ہیں؟

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

حالیہ انتخابات میں اکثریت حاصل کرنے والی جماعت کے سربراہ اور متوقع وزیراعظم نواز شریف نے امن و امان کی بحالی اور شدت پسندی کے واقعات پر قابو پانے کے لیے شدت پسندوں کے ساتھ مذاکرات پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی جماعت ان مذاکرات کے بارے میں سنجیدہ ہے۔ يہ بات پیر کو انہوں نے لاہور ميں پارٹي کے منتخب اراکین اسمبلی کے اجلاس کے بعد اپنا پہلا پاليسي بيان ديتے ہوئے کہی ہے۔

پاکستاني رياست اور شدت پسند کئي برسوں سے ايک دوسے سے بر سرِ پيکار ہيں۔ کيا اب يہ مذاکرات ممکن ہو سکیں گے۔

اس کا جائزہ لیا ہے نامہ نگار ہارون رشيد نے اپنی رپورٹ میں۔

اِسي موضوع پر مسلم ليگ نواز کے رہنما خواجہ سعد رفيق سے کی گئی خصوصی گفتگو اس حصے میں پیش ہے۔

سب سے آخر میں آپ کی جانب سے سوشل میڈیا پر آنے والی آرا شامل ہیں۔

عالمی خبریں، چینی وزیر اعظم کا دورۂ بھارت

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

اس حصے میں پہلے شامل کی گئیں عالمی خبریں جن میں عراق سے دارالحکومت بغداد اور شہر بصرہ اور سامرہ میں بارہ دھماکوں کی خبر شامل تھی جس میں 54 افراد ہلاک اور 175 زخمی ہوئے ہیں۔

اسی طرح شام سے خبر جہاں ایک اہم قصبے القٌصیر پر سرکاری فوجوں اور باغیوں کے درمیان شدید لڑائی جاری ہے اور لبنان سے خبر جہاں کے مسلح گروہ حزب اللہ کے جنگجو باغیوں کے خلاف سرکاری فوج کی مدد کر رہے ہیں۔

ٹیکنالوجی کی دنیا سے خبر جہاں انٹرنیٹ کمپنی یاہو کے انتظامی بورڈ نے سوشل ميڈيا ويب سائٹ ٹمبلر کو/ ایک عشاریہ ایک ارب امریکی ڈالر میں خریدنے کی منظوری دے دی ہے۔

چین کے وزیر اعظم لی کی چیانگ انڈيا کے تین روزہ دورے پر ہیں۔ چین انڈيا کا سب سے بڑا تجارتی پارٹنر ہے۔ لیکن دونوں ملکوں کے دیرینہ سرحدی تنازعات سے کشیدگی پیدا ہو رہی ہے۔ دونوں وزراء اعظم نے پیر کو کئی اہم معاہدوں پر دستخط کیے۔ رشتوں کو اور مضبوط کرنے کی باتیں ہوئیں لیکن سرحدی تنازعات کے حل پر کوئی بات آگے نہ بڑھی۔

دیکھیے آخر میں دہلی سے شکیل اختر کی رپورٹ۔

ضلع سوات میں پہلا خواتین جرگہ

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

زیادہ تر قبائلی معاشروں میں عورت کی تقدیر کا فیصلہ مرد ہی کرتے ہیں اور یہی وہ معاملہ ہے جو اس وقت ان معاشروں میں موجود پڑھے لکھے لوگوں اور بعض جگہوں پرخود ان عورتوں کے لیے قابل قبول نہیں رہا، صوبہ خیبرپختونخوا کے ضلع سوات میں عورتوں نے پختون معاشرے کا پہلا خواتين جرگہ بنايا ہے وہ کہتي ہیں کہ وہ معاشرے سے اب خود ہی اپنا حق لیں گی۔

دیکھیے سوات سے محمود جان بابرکی رپورٹ۔

حاليہ انتخابات ميں خيبر پختونخواہ کے ضلعے دير کے کچھ حلقے ايسے ہيں جہاں عورت کو ووٹ کا حق نہيں مل سکا جس کي وجہ ان علاقوں ميں خواتين کے ووٹ نہ ڈالنے کے بارے ميں سياسي جماعتوں کا ايک معاہدہ ہے۔ اسي تناظر ميں پاکستان تحريک انصاف کي رہنما نسيم حيات سےکی گئی گفتگو اس حصے میں شامل ہے۔

بزنس

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پیر کو شامل ہوتا ہے ہفتہ وار سلسلہ بزنس۔

ملک میں آنے والی حکومت کو معاشی لحاظ سے کافی چیلنجز کا سامنے رہے گا۔ گيارہ مئي کو قوم نے نواز شریف کی پارٹی کو اکثریت دے کر ايک بڑا مینڈیٹ دیا ہے اور اب انہیں اپنے کیے ہوئے وعدوں کو پورا نہ کرنے کا کوئی بہانہ نہیں ملے گا۔ اسی تناظر میں بزنس کے نامہ نگار خرم حسین کا پاکستان مسلم لیگ نواز کے سیکرٹری جنرل سرتاج عزیز سے خصوصی انٹرویو اس حصے میں شامل ہے۔

اسی بارے میں