جمعہ چودہ جون کا سیربین

جمعہ چودہ جون کو نشر ہونے والے بی بی سی اردو سروس کے ٹی وی پروگرام سیربین کے چاروں حصے آپ اس صفحے پر دیکھ سکتے ہیں۔ یہ پروگرام پاکستان میں ایکسپریس نیوز پر نشر کیا گیا اور بی بی سی اردو پر لائیو سٹریم کیا گیا تھا۔

سیربین ہفتے میں تین دن یعنی پیر، بدھ اور جمعے کو پاکستان کے مقامی وقت کے مطابق رات گیارہ بجے ایکسپریس نیوز پر نشر ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ سیربین بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر لائیو بھی نشر کیا جاتا ہے۔

ایران میں صدارتی انتخاب

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

ایران میں نئے صدر کے انتخاب کے لیے جمعہ کو لوگوں نے بہت بڑي تعداد ميں ووٹ ڈالے۔ اس انتخاب میں چھ اُمیدوار مدِمقابل ہیں جن میں سے بیشتر قدامت پسند ہیں۔ تاہم حالیہ دنوں میں صدارتی اُمیدواروں میں حسن روحانی ایک اصلاح پسند کے طور پر سامنے آئے ہیں۔ کامیاب ہونے والا امیدوار ملک کے موجودہ صدر محمود احمدی نژاد کی جگہ لے گا جو دو مرتبہ صدر رہنے کے بعد اب آئینی پابندی کی وجہ سے صدارتی انتخاب لڑنے کے اہل نہیں ہیں۔

صدر احمدی نژاد کے آٹھ سالہ دورِ اقتدار میں ایران کو اپنے متنازع جوہری پروگرام پر بین الاقوامی پابندیوں کا سامنا کر پڑا۔ جس کے باعث ایران معاشی مشکلات سے دوچار ہے۔ تفصيلات سنيے خالد کرامت سے۔

اور اسي پر مزيد بات کرنے کی گئی بي بي سي فارسي ٹي وي کے سينیئر صحافي اور تجزيہ کار سعيد برزين سے۔

سب سے آخر میں دیکھیے سوشل میڈیا پر آنے والی آپ کی آراء۔

عالمی خبریں اور بالی وڈ سٹائل آپرا

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

اس حصے میں شامل تھیں عالمی خبریں جن میں شامی باغیوں کو امریکہ کی جانب سے عسکری امداد فراہم کرنے کے اعلان اور ترک حکومت کی عدالتی فیصلہ آنے تک غازی پارک کی تعمیر روکنے پر رضامندی کا ذکر ہوا۔

اس کے بعد باری تھی بالی وڈ سٹائل اوپرا کی۔ بريڈفورڈ ميں مشہور کلاسيکل آپرا کارمين کو بالي وڈ کے انداز ميں پيش کيا جس میں مرکزي کرادر ادا کيا بالي وڈ اداکار ابھے ديول نے۔ اس بالي وڈ آپرا کي ايک جھلک پيش کی بي بي سي اردو کي دیويا آريا نے۔

خفیہ جاسوسی کے نظام کا کھوج

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

کہیں سی آئی اے کے سابق ملازم ایڈورڈ سنوڈن ای میل اور ٹیلفون نگرانی کا بھانڈا پھوڑ رہے ہیں تو کہیں خود صدر براک اوبامہ اس نگرانی کا دفاع کر رہے ہیں۔ ایسے میں اسلام آباد میں ہمارے نامہ نگار ہارون رشید نے پاکستان میں اس خفیہ جاسوسی کے نظام کا کھوج لگانے کی کوشش کی جس کی موجوددگی کی اطلاعات تو ہیں ليکن سرکاری تصديق يا ترديد ابھی تک نہیں ہوئي۔

اسي تناظر ميں مزيد بات کرنے کے ليے اسلام آباد سے براہِ راست شامل ہوئے انٹيليجينس بيورو کے سابق چيف مسعود شريف خٹک۔

’تو پھر چلیں‘

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

جیسے جانداروں کے ساتھ ہوتا ہے، کوئی اپنی طبعی عمر پوری کرتا ہے، کوئی وقت سے پہلے ہی کسی حادثے یا بیماری کی نذر ہوجاتا ہے۔ اسی طرح شہروں کے ساتھ بھی ہوتا ہے۔ کئی شہر سخت جان اور طویل العمر ہوتے ہیں۔ کئی حادثوں یا آفات کی بھینٹ چڑھ جاتے ہیں اور کچھ ماضی کا بوجھ کمر پر لادے بس چلتے رہتے ہیں، چلتے رہتے ہیں ۔۔۔ تو پھر آج ایسا ہی کوئی شہر دیکھنے چلیں۔

اسی بارے میں